تازہ ترین
  • بریکنگ :- پاکستان کودوبارہ ترقی کی راہ پرلےکرجائیں گے،احسن اقبال
  • بریکنگ :- گزشتہ دورحکومت میں ہم نےوژن 2025 لانچ کیا،احسن اقبال
  • بریکنگ :- وژن 2025 کامقصدپاکستان کوترقی یافتہ ممالک کی صف میں لاناتھا،احسن اقبال

نئی قابل تجدید توانائی پالیسی 2019ء وزیراعظم کو پیش، اہداف بھی مقرر

Last Updated On 05 September,2019 03:45 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) متبادل ذرائع سے سستی بجلی کی پیداوار بڑھانے کے لیے اہم پیش رفت، نئی قابل تجدید توانائی پالیسی 2019 وزیراعظم کو پیش کر دی گئی، اہداف بھی مقرر کر لیے گئے۔

سستی بجلی کی پیداوار میں اضافے کے لیے نئی پالیسی وزیراعظم عمران خان کو پیش کی گئی ہے جس میں سرمایہ کاروں کے لیے مراعات تجویز کرنے کے علاوہ بجلی کی پیداوار کے لیے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال ترجیح قرار دیا گیا ہے۔ 


پاور ڈویژن کی قابل تجدید توانائی پالیسی 2019 میں متبادل و قابل تجدید ذرائع سے بجلی کی پیداوار بڑھانے کے اہداف مقررکئے گئے ہیں۔ 2025 تک 20 فیصد اور 2030 تک 30 فیصد بجلی متبادل ذرائع سے پیدا کی جائے گی۔

پیداوار میں اضافے کے ساتھ ترسیلی نظام بھی اپ گریڈ کیا جائے گا۔ صوبوں اور آزادکشمیر سے پیدا ہونے والی بجلی کو نیشنل گرڈ میں شامل کرنے لیے بھی ہرسال کا پلان بنایا جائے گا، نجی سطح پر بجلی کی فروخت کے منصوبوں اور ملکی ضرورت سے زائد بجلی کی پیداوار کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔

متبادل توانائی ڈویلپمنٹ بورڈ نئے منصوبوں کے لیے مقامات کی نشاندہی کرے گا جبکہ ایسے منصوبوں کے لیے مشینری کی درآمد پرکسٹمزکی چھوٹ بھی دی جائے گی۔