تازہ ترین
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکےمزید567 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 12 لاکھ 67 ہزار 393 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک میں کوروناکےایکٹوکیسزکی تعداد 24 ہزار 386 ہے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹےکےدوران کوروناسےمزید 16 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 28 ہزار 344 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکے 864 مریض صحت یاب،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےصحت یاب افرادکی مجموعی تعداد 12 لاکھ 14 ہزار 663 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 39 ہزار 200 کوروناٹیسٹ کیےگئے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 2 کروڑ 4 لاکھ 5 ہزار 357 کوروناٹیسٹ کیےجاچکے
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 1704 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
  • بریکنگ :- پنجاب 4 لاکھ 38 ہزار 636،سندھ میں 4 لاکھ 66 ہزار 945 کیسز،این سی اوسی
  • بریکنگ :- خیبرپختونخواایک لاکھ 77 ہزار 240،بلوچستان میں 33 ہزار 159 کیس رپورٹ
  • بریکنگ :- اسلام آباد ایک لاکھ 6 ہزار 615،گلگت بلتستان میں 10 ہزار 376 کیسز
  • بریکنگ :- آزادکشمیرمیں کورونامریضوں کی تعداد 34 ہزار 422 ہوگئی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 1.44 فیصدرہی،این سی اوسی

خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس کی تمام اقسام کا پتہ لگانے کے لیے اولین لیبارٹری قائم

Published On 26 September,2021 08:44 am

پشاور: (دنیا نیوز) خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس کی تمام اقسام کا پتہ لگانے کے لیے اولین لیبارٹری قائم کر دی گئی، لیبارٹری سے کورونا کے علاوہ کسی بھی وبائی مرض کے وائرس کا بروقت پتہ چل سکے گا، متعدی اور غیر متعدی امراض کی فوری تشخیص میں بھی مدد ملے گی۔

خیبر پختونخوا میں وبائی امراض اور مختلف وائرس سے نمٹنے کے لیے حکومت نے جدید لیبارٹری تیار کرلی، کسی بھی وائرس سے متعلق بروقت معلومات حاصل کی جا سکیں گی۔

پشاور کی خیبر میڈیکل یونیورسٹی میں تین کروڑ روپے کی لاگت سے جینوم سیکوینسنگ لیب نے کام کا آغاز کر دیا، لیبارٹری سے کورونا کے علاوہ کسی بھی وبائی مرض کے وائرس کا بروقت پتہ چل سکے گا، متعدی اور غیر متعدی امراض کی فوری تشخیص میں بھی مدد ملے گی۔

لیب کی مدد سے کورونا کی کسی بھی قسم سے متعلق مکمل معلومات حاصل کی جا سکتی ہیں، خیبرمیڈیکل یونیورسٹی حکام کے مطابق نئے آنیوالے وائرسز کے ٹیسٹ بھی کیے جائیں گے۔

نئی جدید لیب سے تشخیص شدہ امراض کے بر وقت تدارک اور علاج معالجے کی راہیں بھی کھلیں گی، خیبر میڈیکل یونیورسٹی میں قائم جدید لیب سے نہ صرف مختلف وائرسز کی اقسام سے متعلق معلومات حاصل ہونگی بلکہ بروقت روک تھام کے لیے اقدامات اٹھانے میں بھی مدد ملے گی۔