تازہ ترین
  • بریکنگ :- کراچی:ڈیفنس فیز 6میں ذاتی رنجش پرفائرنگ،ایک شخص زخمی
  • بریکنگ :- کراچی:زخمی شخص کی علی کےنام سےشناخت،ملزم شاہجہاں فرار،پولیس
  • بریکنگ :- کراچی:گڈاپ سٹی میں ڈکیتی مزاحمت پرفائرنگ،نوجوان زخمی
  • بریکنگ :- کراچی:زخمی کاشان کوعباسی شہیداسپتال منتقل کردیاگیا،پولیس
  • بریکنگ :- کراچی:لانڈھی اسپتال چورنگی کےقریب گھرمیں گولی لگنےسےخاتون زخمی
  • بریکنگ :- کراچی:24سالہ صفیہ کوگولی نامعلوم سمت سےآکرلگی،اسپتال منتقل،پولیس
  • بریکنگ :- کراچی:شاہراہ نورجہاں میں گولی لگنےسےخاتون زخمی
  • بریکنگ :- خاتون گھرمیں موجودتھی گولی نامعلوم سمت سےآکرلگی، پولیس
  • بریکنگ :- زخمی خاتون کی شناخت 40 سالہ زینت کےنام سےہوئی ،پولیس
  • بریکنگ :- کراچی:زخمی خاتون کوعباسی شہیداسپتال منتقل کردیاگیا،پولیس

ڈینگی کا پپپتے کے پتوں سے علاج، حکمت اور میڈیکل سائنس کیا کہتی ہے؟

Published On 11 November,2021 10:09 am

لاہور: (دنیا نیوز) ڈینگی بخار کا علاج کرنے کے لیے پپپتے کے پتوں کے استعمال کے بارے میں قیاس آرائیاں جاری ہیں، اِس سلسلے میں حکمت اور میڈیکل سائنس کی رائے مختلف ہے۔

ڈینگی کے مرض کے علاج کے لیے مختلف ٹوٹکوں کا استعمال بھی زور پکڑ گیا، ڈینگی بخار میں پپیتے کے پتوں کا استعمال فائدہ مند ثابت ہونے کی باتیں بھی گردش کرنے لگیں جس کے باعث مارکیٹ سے پپیتے کے پتے ہی غائب ہو گئے۔

بعض اطبا کے مطابق پپیتے کے پتوں کے جوس میں ایسے اجزا موجود ہیں جو ڈینگی بخار روکنے میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔ دوسری طرف جدید سائنس کے ماہرین یہ تو تسلیم کرتے ہیں کہ پپیتے کا استعمال کئی ایک امراض میں انتہائی مفید ثابت ہوتا ہے لیکن ڈینگی کے مرض میں پپیتے کے پتوں کا مفید ہونے کی کوئی سائنسی توجیح ثابت نہیں ہے۔

بہرحال پیپتے کے پتوں کا استعمال کرنے والوں کو اِس بات کا بھی علم ہونا چاہیے کہ اِن کا استعمال کس انداز اور کتنی مقدار میں کرنا چاہیے۔