تازہ ترین
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹےکےدوران کوروناسےمزید 27 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 29 ہزار 219 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24گھنٹےکےدوران 70 ہزار 389 کوروناٹیسٹ کیےگئے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- 24گھنٹےمیں کوروناکےمزید7 ہزار 963 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 11.31 فیصدرہی،این سی اوسی

ہیوسٹن ”کشمیر بنے گا پاکستان“نعروں سے گونج اٹھا، مودی کیخلاف مظاہروں کا آغاز

Last Updated On 22 September,2019 09:38 pm

ہیوسٹن: (دنیا نیوز) امریکی شہر ہیوسٹن میں ہزاروں کی تعداد میں پاکستانی، کشمیری اور سکھ مظاہرین نے اکھٹے ہو کر بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے خلاف احتجاج کا آغاز کر دیا ہے۔

منتظمین کا کہنا ہے کہ مظاہرین کی آمد کا سلسلہ ہر طرف سے جاری ہے۔ مظاہرین ناصرف بسوں اور کاروں بلکہ پیدل چل کر بھی نریندر مودی کیخلاف مظاہرہ کرنے کیلئے پہنچ رہے ہیں۔

مظاہرین کی ایک بڑی تعداد نے ”مودی کلر“ کے نام کی ٹی شرٹیں پہن رکھی ہیں جبکہ ہاتھوں میں بھارت کے مظالم اور کشمیریوں سے یکجہتی پر مشتمل نعروں کے بینرز اٹھا رکھے ہیں۔

ممتاز امریکن پاکستانی ظفر طاہر نے بتایا کہ ٹیکساس کے ہر شہر اور گاؤں سے پاکستانی، سکھ، بھارتی مسلمان اور کشمیری سینکڑوں بسوں کے ذریعے مظاہرے کے مقام کے لیے صبح سات بجے اپنے گھروں سے نکل گئے تھے۔

ٹیکساس کے علاقے میں قائم تین سو سے زائد مساجد نے بسوں کا اہتمام کیا ہے اور اور اس وقت سیکڑوں لوگ مساجد کے باہر کھڑے ہیں مگر بسوں میں جگہ نہیں ہے۔

اطلاعات ہیں کہ ہیوسٹن میں بھارتی وزیراعظم کے استقبالی جلسے کے باہر مظاہرہ کرنے والوں کی دن دو بجے تک تعداد ایک محتاط اندازے کے مطابق تیس ہزار سے تجاوز کر جائے گی جبکہ مودی کے استقبالی جلسے کے سٹیڈیم میں پینتیس ہزار سے پچاس ہزار افراد متوقع ہیں۔

واضع رہے مودی کے جلسے میں جہاں صدر ٹرمپ شرکت کر رہے ہیں تو وہیں پاکستانیوں، سکھوں اور کشمیریوں کی بڑی تعداد جلسہ گاہ کے باہر مظاہرہ کر رہی ہے۔