تازہ ترین
  • بریکنگ :- اب ن لیگ کےمعافی مانگنےکاوقت ہواچاہتاہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- ن لیگ 4 ماہ سےکہہ رہی ہےکہ ان کی ڈیل ہوگئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- یہ سب کوخودٹیلیفون کرکےبتاتےہیں کہ بات بن گئی ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- اپوزیشن کی کاوشیں اپنےہی دام میں صیادآگیاکےمصداق ہیں،شہبازگل
  • بریکنگ :- ہمارےانکشاف سےان کی چیخ وپکارشروع ہوگئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- پہلی ڈیل شریف فیملی نےضیاالحق،دوسری جونیجوکیساتھ کی،شہبازگل
  • بریکنگ :- نوازشریف نےپرویز مشرف کےساتھ بھی ڈیل کی،شہبازگل
  • بریکنگ :- ن لیگ نےڈیل کرکےپارٹی کی سینئرقیادت کی پیٹھ میں چھراگھونپا،شہبازگل
  • بریکنگ :- ڈیل کےبعدساری شریف فیملی منظرعام سےغائب ہوگئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- پہلےڈیل سےانکارکرتےرہےپھرکہا 10 کےبجائے 5 سال کی ڈیل ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- مقصودچپڑاسی شریف فیملی کا 9 ہزارروپےپرملازم ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- مقصودچپڑاسی کےاکاؤنٹ میں 3700 کروڑکس نےڈالے؟ شہبازگل
  • بریکنگ :- تمام ملازمین کےاکاؤنٹس میں کل 16 ارب روپےآئے،شہبازگل
  • بریکنگ :- اسلام آباد:شریفوں کوبتاناچاہیےکہ ڈیل کس سےہوئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- شریفوں کی ڈاکٹرائن اقتدارمیں آنا،مال بنانا،ڈیل کرنااوربھاگ جاناہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- شریف فیملی پہلےگالیاں دیتی ہےپھرپاؤں پڑجاتی ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- شریف فیملی کو 16 ارب روپےکاجواب دیناپڑےگا،شہبازگل
  • بریکنگ :- چاروں شریف ڈیل اورڈھیل دینےکےباوجودنہیں بچ سکتے،شہبازگل

مسلم لیگ ق نے حکومت سے تحریری معاہدے پر عملدرآمد کا مطالبہ کردیا

Last Updated On 15 January,2020 08:12 pm

لاہور: (دنیا نیوز) حکومتی کمیٹی اور مسلم لیگ (ق) کے مذاکرات کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی ہے۔ ق لیگ نے کمیٹی کو تحریری معاہدے کی کاپی فراہم کرتے ہوئے اس پر عملدرآمد کا مطالبہ کر دیا ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے تسلیم کیا ہے کہ ق لیگ کیساتھ حکومت کا تحریری معاہدہ ہوا ہے۔ انہوں نے چیف سیکرٹری اور آئی جی کو ق لیگ سے ورکنگ ریلیشن شپ بہتر بنانے کی بھی ہدایت کی۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا کہ مسلم لیگ ق ہماری قابل اعتماد اتحادی جماعت ہے، اس کے ساتھ کیے وعدے پورے کریں گے۔

خیال رہے کہ حکومتی مذاکراتی کمیٹی نے مسلم لیگ ق کے وفد سے ملاقات اہم ملاقات کی۔ حکومتی وفد میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار، جہانگیر ترین اور پرویز خٹک جبکہ مسلم لیگ ق کے وفد میں طارق بشیر چیمہ، مونس الہیٰ اور چودھری سالک شریک تھے۔

چیف سیکرٹری پنجاب اعظم سلیمان اور آئی جی پنجاب شعیب دستگیر بھی اس موقع پر موجود تھے۔ اس میٹنگ میں پنجاب میں ترقیاتی منصوبوں اور دیگر امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا جبکہ ق لیگی وفد نے اپنے مسائل حکومتی کمیٹی کے سامنے رکھے۔

ملاقات کے بعد جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ جی ڈی اے اور بی این پی مینگل سے ملاقاتیں ہیں، حکومت 2023ء تک ایسے ہی چلتی رہے گی۔ ہماری حکومت کو اس وقت کوئی مشکل پیش نہیں آ رہی۔ ایم کیو ایم کابینہ سے الگ ہوئی حکومت سے نہیں، ان کے رہنماؤں کیساتھ رابطے جاری ہے، وہ کابینہ میں واپیس آئیں گے۔

لیگی رہنما طارق بشیر چیمہ کا کہنا تھا کہ ایک گھر میں رہتے ہوئے اختلافات ہوتے ہیں۔ حکومت نے ہماری بات سنی، ان کے شکر گزار ہیں۔ ترقیاتی عمل کے حوالے سے کچھ مطالبات تھے۔ حکومت نے یقین دہانی کروائی ہے کہ ہمارے مطالبات پورے ہوں گے۔