تازہ ترین
  • بریکنگ :- میونسپل کمیٹی خیرپورکی وارڈنمبر 15کامکمل غیرحتمی نتیجہ
  • بریکنگ :- خیرپور: پیپلز پارٹی کےغلام حسین مغل 1304ووٹ لےکر کامیاب
  • بریکنگ :- خیرپور: آزادامیدوارمنصور اقبال شیخ 408 ووٹ لے کردوسرے نمبر پر
  • بریکنگ :- کشمور: ٹاؤن کمیٹی گڈوکی وارڈنمبر 7کا مکمل غیرحتمی نتیجہ
  • بریکنگ :- کشمور: آزاد امیدوار محراب علی مزاری 37 ووٹ لےکر کامیاب
  • بریکنگ :- کشمور: جماعت اسلامی کے عبیداللہ 18 ووٹ لےسکے
  • بریکنگ :- کشمور: ٹاؤن کمیٹی گڈوکی وارڈ نمبر 8کامکمل غیر سرکاری غیرحتمی نتیجہ
  • بریکنگ :- کشمور: ایس یوپی کے امیدوار 50ووٹ لےکر کامیاب
  • بریکنگ :- کشمور: پیپلزپارٹی کےزبیراحمد 49 ووٹ لےسکے
  • بریکنگ :- خیرپور: میونسپل کمیٹی وارڈنمبر 17 کا مکمل غیرحتمی نتیجہ
  • بریکنگ :- خیرپور: پیپلزپارٹی کے اصغر شیخ ایک ہزار 149 ووٹ لےکرکامیاب
  • بریکنگ :- خیرپور:آزاد امیدوار مجید شیخ 356 ووٹ لےسکے
  • بریکنگ :- خیرپور: ٹاؤن کمیٹی کوٹ ڈیجی کےوارڈنمبر 8 کامکمل غیرحتمی نتیجہ
  • بریکنگ :- خیرپور: جی ڈی اےکےمیرڈنل تالپور 954 ووٹ لےکرکامیاب
  • بریکنگ :- خیرپور: پیپلز پارٹی کےسیدانوارعلی شاہ 348 ووٹ لےسکے
  • بریکنگ :- خیرپور: میونسپل کمیٹی خیرپوروارڈنمبر 21کامکمل غیرحتمی نتیجہ
  • بریکنگ :- خیرپور: آزاد امیدوار جاوید بروہی 675 ووٹ لےکر کامیاب
  • بریکنگ :- خیرپور: پیپلزپارٹی کے انورعلی 400 ووٹ لےسکے
  • بریکنگ :- شہدادکوٹ: میونسپل کمیٹی کےوارڈ نمبر 3 کا مکمل غیرحتمی نتیجہ
  • بریکنگ :- شہدادکوٹ: پیپلزپارٹی کےطارق حسین بروہی 272 ووٹ لےکرکامیاب
  • بریکنگ :- شہدادکوٹ: آزاد امیدوار دلاور خان کھوسو 147 ووٹ لےسکے

وزیراعظم کے ترجمان ندیم افضل چن نے استعفیٰ دے دیا

Published On 13 January,2021 09:31 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وزیراعظم کے ترجمان ندیم افضل چن نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیا ہے۔ انہوںنے اپنے بیان میں کہا ہے کہ میں نے اپنا استعفیٰ وزیراعظم آفس کو بھجوا دیا ہے، تاہم میں پاکستان تحریک انصاف کا حصہ رہوں گا۔

ذہن میں رہے کہ گزشتہ دنوں ندیم افضل چن کی جانب سے ایک ٹویٹ میں کہا گیا تھا کہ یہ میرے کمزور ایمان کی نشانی ہے کہ میں نے صرف مظلومین کے ساتھ ہمدردی کی سیاست نہیں کی۔

ان کا کہنا تھا کہ آج کل مقبول بیانیہ صرف سیاستدانوں کو گالیاں دینا ہے جو میں نہ پہلے دیتا تھا ناں اب دوں گا۔

اس ٹویٹ کے ردعمل میں معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے بھی اپنی ٹویٹ میں کہا تھا کہ جب آپ کا لیڈر مشکل فیصلہ کرتا ہے تو وہ فیصلہ کرنا بھی مشکل ہوتا ہے اور اس کا دفاع بھی، میرے لئے آسان ہے چپ رہنا، میڈیا سے غائب ہو جانا، عوام میں مقبول بیانیے کیطرف کا بیان دینا۔ میں سوچ سمجھ کر اپنے لیڈر کا دفاع کر رہا ہوں، بھلے مجھ پر جتنی بھی تنقید ہو۔