تازہ ترین
  • بریکنگ :- پارلیمنٹ کوکمزورکرناجمہوریت کوکمزورکرنےکےمترادف ہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف اپنےفیصلےکرنےمیں آزادنظرنہیں آتے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- سندھ کےسب سےبڑےدشمن سندھ پرراج کررہےہیں،فوادچودھری
  • بریکنگ :- یہ ضروری ہےکہ جوپیسہ سندھ کودیں اس کی مانیٹرنگ کی جائے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- زرداری،فریال تالپور،مرادعلی شاہ کی زمینوں کاپانی چوری کیوں نہیں ہوتا؟فوادچودھری
  • بریکنگ :- کراچی:سندھ میں اگلی حکومت پی ٹی آئی کی ہوگی،فوادچودھری
  • بریکنگ :- ان کےدن بھی تھوڑےہیں،آخری الیکشن تھاجوانہوں نےلڑلیا،فوادچودھری
  • بریکنگ :- اپوزیشن کےپاس کوئی ایجنڈانہیں،وزیراطلاعات فوادچوھری
  • بریکنگ :- ارسانےعملی اقدام شروع کیےتومرادعلی شاہ جوتےچھوڑکربھاگ گئے،فواد چودھری
  • بریکنگ :- پانی خودچوری کررہےہیں،الزام وفاق،پنجاب پرلگایاجارہاہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- وفاق اورپنجاب میں(ن)لیگ نے 30 سال حکومت کی،فوادچودھری
  • بریکنگ :- پیپلزپارٹی نےہمیشہ جمہوریت کیخلاف اقدامات کیے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- جوپیسہ سندھ کےحوالےکرتےہیں وہ دبئی سےبرآمدہوتاہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- اپوزیشن انتخابی اصلاحات کیلئےپارلیمنٹ میں آکرتجاویزدے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- چاہتےہیں کہ پارلیمان کومضبوط بنادیں،وزیراطلاعات فوادچودھری
  • بریکنگ :- فضل الرحمان جیسےلوگ چاہتےہیں کہ سسٹم نہ چلے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف کبھی مولانا،کبھی بلاول کاکندھااستعمال کررہےہیں،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف کےپاس(ن)لیگ کاکنٹرول نہیں ہے،فوادچودھری

'رمضان کا چاند 13 اپریل کی شام دیکھا جاسکے گا، 14 اپریل کو پہلا روزہ ہوگا'

Published On 03 April,2021 11:28 am

اسلام آباد: (دنیا نیوز) فواد چودھری نے کہا ہے کہ رمضان کا چاند 13 اپریل کی شام دیکھا جاسکے گا، 14 اپریل کو پہلا روزہ ہوگا۔

وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ رمضان کا چاند 13 اپریل کی شام کو لاہور، اسلام آباد، پشاور سمیت کئی دیگر شہروں میں واضع طور پر دیکھا جاسکے گا، یہ رمضان سب کیلئے رحمت و برکت کا باعث بنے۔

 یاد رہے ملک بھر میں رمضان المبارک اور عید پر چاند کا تنازع حل کرنے کیلئے وزارت مذہبی امور اور مرکزی رویت ہلال کمیٹی میں رمضان المبارک کا چاند دیکھنے کے لئے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس پشاور میں رکھنے کی تجویز زیر غور ہے جبکہ تمام مکاتب فکر کے جید علما و مشائخ عظام سمیت صوبائی رویت ہلال کمیٹیوں کے ممبران سے بھی ملاقات کی جائے گی۔