تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزارت خزانہ کی ملکی معیشت پرآؤٹ لک رپورٹ جاری
  • بریکنگ :- اسلام آباد:نان ٹیکس آمدنی میں کمی ریکارڈکی گئی،وزرات خزانہ
  • بریکنگ :- درآمدات،محصولات،ترسیلات زر،برآمدات،بڑی صنعتوں کی پیداوارمیں اضافہ
  • بریکنگ :- رواں مالی سال اب تک ترسیلات زر 11.9فیصداضافےسے 10.6ارب ڈالرریکارڈ
  • بریکنگ :- ملکی برآمدات 32.2فیصداضافےسے 9.7ارب ڈالرکی سطح پرپہنچ گئیں
  • بریکنگ :- درآمدات 66.3فیصداضافےسے 23.5ارب ڈالرہوگئیں،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- رواں مالی سال کےپہلے 4ماہ میں تجارتی خسارہ 13.8 ارب ڈالرتک پہنچ گیا
  • بریکنگ :- کرنٹ اکاؤنٹ خسارےمیں 5.1 ارب ڈالرکااضافہ ریکارڈکیاگیا،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ جی ڈی پی کا 4.7 فیصدریکارڈکیاگیا،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری 4فیصدکمی سے 662.1 ملین ڈالررہی
  • بریکنگ :- زرمبادلہ ذخائر 23نومبرتک 22ارب 98 کروڑڈالرسےزائدہوگئے،رپورٹ
  • بریکنگ :- 4 ماہ میں ٹیکس ریونیو 36.8فیصداضافےسے 1843ارب روپےرہا،رپورٹ
  • بریکنگ :- 4 ماہ میں پی ایس ڈی پی کی مدمیں 392.7ارب روپےمنظورکیےگئے
  • بریکنگ :- 3 ستمبرتک مالیاتی خسارہ بڑھ کر 438ارب روپےتک پہنچ گیا،رپورٹ
  • بریکنگ :- زرعی قرضے 6.5فیصداضافےسے 381.3ارب روپےکی سطح پررہے
  • بریکنگ :- اکتوبرمیں مہنگائی کی ماہانہ شرح 9.2فیصدریکارڈکی گئی،رپورٹ
  • بریکنگ :- جولائی تااکتوبرمہنگائی کی سالانہ شرح 8.7 فیصدریکارڈ،رپورٹ
  • بریکنگ :- جولائی تاستمبربڑی صنعتوں کی شرح نمومیں 5.2 فیصداضافہ ہوا،رپورٹ

کمشنر کراچی کو ہٹائیں، انہیں کچھ معلوم نہیں: چیف جسٹس

Published On 08 April,2021 11:33 am

کراچی: (دنیا نیوز) چیف جسٹس نے شاہراہ قائدین تجاوزات کیس میں ریمارکس دیئے کہ کراچی کو کیا سمجھ رکھا ہے، آپ لوگوں نے ؟ اب آنکھیں کھولنے کا وقت آگیا، یہ کیپٹل سٹی رہا ہے، کیا بنا دیا اس شہر کو ؟ وزیراعلی سندھ سے کہا تھا کہ بتائیں، شہر کی بہتری کیسے کر سکتے ہیں، وزیراعلی سندھ کو کہیں یہاں آئیں اور وضاحت دیں، کمشنر کراچی کو ہٹائیں، انہیں کچھ معلوم نہیں۔

 سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں جسٹس اعجاز الاحسن، جسٹس مظہر عالم میاں خیل پر مشتمل 3 رکنی بینچ نے اہم مقدمات کی سماعت کی۔

رائل پارک کیس کی سماعت کے دوران رپورٹ پر چیف جسٹس نے کہا ہمارے سامنے ڈپٹی کمشنرز کی رپورٹ کیسے پیش کی گئی۔ کمشنر نے کہا کھیل کے میدان بنا دیئے، رائل پارک میں سب ٹاور گرا دیئے۔

چیف جسٹس نے کہا ہمارا آرڈر کیا تھا اور یہ کیا بتا رہے ہیں، کچھ معلوم نہیں، یہ ہمارے لیے بڑی مشکلات پیدا کر رہے ہیں تو عام شہریوں کا کیا حال ہوگا، افسوس ہے انہیں تو کراچی کے بارے میں کچھ معلوم ہی نہیں، کمشنر کراچی کو ہٹائیں، باغ ابن قاسم کیس میں کمشنر نے بتایا کہ سبزہ اگانے کا کام جاری ہے، تعمیرات کو منہدم کر دیا۔ عدالت نے باغ ابن قاسم کی تزئین و آرائش مکمل کرنے کا حکم دے دیا۔

شاہراہ قائدین تجاوزات کیس میں چیف جسٹس نے کہا کہ اچانک سے ایک پلاٹ نکلتا ہے اور کثیر المنزلہ عمارت بن جاتی ہے۔ کمشنر کراچی نے کہا سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے مطابق عمارت نالے پر نہیں۔ چیف جسٹس نے کہا پوری عمارت نالے پر کھڑی ہے، ایس بی سی اے والے خود ملے ہوئے ہیں۔ ڈی جی سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی سے کہا کہ کل سپریم کورٹ اور وزیراعلی ہاؤس پر بھی عمارتیں بنوا دینگے آپ لوگ۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ہر مہینے ایس بی سی اے میں اربوں روپے جمع ہوتا ہے، ایڈووکیٹ جنرل صاحب یہ کیا ہو رہا ہے ؟ ابھی نسلہ ٹاور کی لیز منسوخ کر دیتے ہیں۔ عدالت نے ڈی جی ایس بی سی اے کو عمارت گرانے کا حکم دے دیا۔ فیروزآباد میں مختیار کار کے معاملے پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کراچی کو مختاروں میں بانٹ دیا کیا ؟ یہاں سماعت کرنا بے کار ہے۔

سپریم کورٹ نے ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو وضاحت کے لیے کل تک کی مہلت دیتے ہوئے کراچی سرکلر ریلوے 9 ماہ میں مکمل کرنے کا حکم دے دیا۔