تازہ ترین
  • بریکنگ :- اسلام آبادمیں بلدیاتی انتخابات 15 اپریل کوکرانےکافیصلہ
  • بریکنگ :- بلدیاتی انتخابات ای وی ایم کےذریعےکرائےجائیں گے
  • بریکنگ :- الیکشن کمیشن نےوفاقی حکومت سے 3900 ای وی ایم مانگ لیں
  • بریکنگ :- وزیراعظم کی الیکشن کمیشن کوای وی ایم فراہم کرنےکی ہدایت
  • بریکنگ :- ٹریننگ اورٹیسٹنگ کیلئے 50 مشینیں الیکشن کمیشن کودی جارہی ہیں،شبلی فراز

انگلش میڈیم سسٹم ذہنی غلامی لایا،ہماری تنزلی کی بڑی وجہ تعلیمی نظام ہے:وزیراعظم

Published On 25 August,2021 05:23 pm

لاہور: (دنیا نیوز) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ انگلش میڈیم میں ذہنی غلامی تھی۔ ہمارے ملک کے نیچے آنے کی بڑی وجہ تعلیمی نظام ہے۔ گورنمنٹ سکولز میں پہلے بڑا اچھا سسٹم تھا لیکن آہستہ آہستہ نیچے کی طرف چلا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں کسی نے تعلیم کی بہتری پر توجہ نہیں دی، طبقاتی نظام تعلیم نے معاشرے کو تقسیم کردیا، یکساں نصاب مستقبل میں ملک کیلئے فائدہ مند ہوگا۔

وزیراعظم نے یہ بات لاہور میں ایجوکیشن کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ مینار پاکستان پر جو کچھ ہوا اس پر شرمندگی اور تکلیف ہوئی۔ دنیا میں سب سے زیادہ خواتین کی عزت ہوتی تھی، ہم آج یہاں جو تباہی دیکھ رہے ہیں بچوں کی تربیت نہ ہونے کی وجہ ہے۔ ہمیں آنے والی نسلوں کے بہتر مستقبل کے بارے سوچنا ہے۔ یکساں نصاب سے آنے والے وقت میں بہت فائدہ ہوگا۔

عمران خان نے کہا کہ بہت ضروری ہے کہ ہم اپنے بچوں کی تربیت کریں۔ ہمیں بچوں کو دنیا کے سب سے عظیم انسان نبی ﷺ کی زندگی بارے پڑھانا چاہیے۔

انہوں نے اس موقع پر یکساں تعلیمی نصاب کو موجودہ حکومت کی سب سے بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے دنیا کے کے بڑے ترقی یافتہ ممالک کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ چین، جاپان اور فرانس میں کتنے تعلیمی نصاب ہیں؟ ہمارے لئے یکساں نصاب بہت بڑا چیلنج ہے۔ وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور یہاں مراد راس نے بہت اچھا کام کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم بنا تو ہر تقریب میں انگلش بولی جا رہی تھی۔ پاکستان میں 80 فیصد لوگوں کو انگلش نہیں آتی لیکن پارلیمنٹ اور سینیٹ اجلاسوں میں اراکین انگریزی میں تقریر شروع کر دیتے ہیں، یہ سب کچھ لوگوں کو متاثر کرنے کیلئے کیا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ انگریز کے تعلیمی نظام نے ہمیں کلچر اور اسلام سے بھی دور کیا۔ اصولاً جب ہم آزاد ہوئے تب ہمیں ایک سلیبس بنانا چاہیے تھا۔ سکولوں کا نظام تین طرف چلا گیا۔ ایک طرف دینی مدارس، ایک طرف اردو میڈیم اور چھوٹی سی کلاس کے لیے انگلش میڈیم بن گئے۔

وزیراعظم عمران خان نے مینار پاکستان واقعہ کو انتہائی شرمناک اور تکلیف دہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ مناسب تربیت نہ ہونے کے سبب نئی نسل تباہی کی طرف جا رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: مینار پاکستان کیس: وزیراعظم کا بروقت پولیس رسپانس نہ ہونے پر اظہار ناراضی

وزیراعظم عمران خان نے مینار پاکستان میں خاتون کیساتھ بدسلوکی کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے بروقت پولیس رسپانس نہ ہونے پر سخت ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے آئی جی پنجاب کو ہدایت دی ہے کہ ایسے واقعات کے سدباب کیلئے فوری اقدامات کئے جائیں۔

دورہ لاہور کے دوران وزیراعظم عمران خان سے چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق ملک اور آئی جی پنجاب انعام غنی نے ملاقات کی۔ اس اہم ملاقات میں وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار بھی موجود تھے۔

ملاقات میں صوبہ میں امن وامان کی مجموعی صورتحال کے علاوہ قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی، مہنگائی اور ذخیرہ اندوزی کی روک تھام کیلئے انتظامیہ کے اقدامات پر وزیراعظم کو بریفنگ دی گئی۔

وزیراعظم عمران خان کو صوبہ بھر میں خواتین کے تحفظ کیلئے اٹھائے گئے اقدامات پر بھی بریفنگ دی گئی۔ وزیرِ اعظم نے ایسے واقعات کی روک تھام اور خواتین کے تحفظ کیلئے فوری اور سخت اقدامات کی ہدایت کی۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ملزمان کے خلاف فوری کارروائی کرکے سخت سے سخت سزا یقینی بنائی جائے۔ وزیراعظم عمران خان نے شہریوں کے جان و مال کے تحفظ کرنے کے لئے اقدامات کرنے کی بھی ہدایت کی۔