تازہ ترین
  • بریکنگ :- فیٹف نےحالیہ اجلاس میں پاکستان کی کارکردگی کاجائزہ لیا ،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- فیٹف نےپاکستان کی نمایاں پیشرفت کوسراہا،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- پاکستان نے2021ایکشن پلان کے7میں سے 4نکات پرعملدرآمد کرلیا،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- پاکستان نےمقررہ مدت سےپہلےخاطرخواہ پیشرفت کی،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- فیٹف پاکستان کااگلاریویوفروری2022 میں کرےگا،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- پاکستانی وفدکی سربراہی وزیرتوانائی محمدحماداظہرنےکی،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- پاکستان دونوں ایکشن پلانزکےاہداف کےحصول کیلئےپرعزم ہے،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- فیٹف کاتمام ایکشن پلانزپرپاکستان کے عملدرآمدپراطمینان کااظہار،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- فیٹف کوایکشن پلانزکےبارےمیں جامع رپورٹ پیش کردی گئی،وزارت خزانہ

افغانستان مسئلہ پر وزیر اعظم کے مؤقف کو پوری دنیا تسلیم کر رہی ہے: طاہرا شرفی

Published On 28 August,2021 06:34 pm

لاہور: (ویب ڈیسک) وزیر اعظم کے نمائندہ خصوصی برائے مذہبی ہم آہنگی و مشرق وسطیٰ حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ افغانستان کے مسئلہ پر وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے مؤقف کو آج پوری دنیا تسلیم کر رہی ہے ، پاکستان کی مضبوط خارجہ پالیسی کا نتیجہ ہے کہ تمام عرب اسلامی ممالک ،امریکہ، برطانیہ بھی ہمارے مؤقف کو تسلیم کر رہے ہیں۔

لاہور میں علماء و مشائخ اور ذرائع ابلاغ سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ محمد طاہر محمود اشرف نے کہا ہے کہ پاکستان کے مخالف بھی افغان مسئلہ پر پاکستان کے مؤقف کی تائید کے ساتھ تعاون چاہ رہے ہیں۔ امید کرتے ہیں کہ طالبان نے جو اب تک اعلانات کیے ہیں ان پر عمل ہو گااور دنیا کو بھی طالبان کو کام کرنے کا موقع دینا چاہیے ۔

ان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں ایک مستحکم ، مضبوط حکومت خطے کے امن اور مستقبل کی ضروری ہے ۔ طالبان کو مشورہ دے سکتے ہیں ، ان پر حاکم نہیں ہیں ،دنیا کو دیکھنا ہو گا کہ ہندوستان نے افغانستان میں بیٹھ کر پاکستان اور خطے کے امن کے خلاف کیا کیا سازشیں کی ہیں۔

طاہر اشرفی کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن و استحکام کو تباہ کرنے کی ہندوستان عالمی دہشت گرد تحریکوں کے ساتھ مل کر سازش کر سکتا ہے۔ موجودہ صورتحال پر غور و فکر کیلئے یکم ستمبر کو اسلام آباد میں پاکستان علماء کونسل نے علماء و مشائخ کنونشن بلایا ہے ۔