تازہ ترین
  • بریکنگ :- اسلام آباد:جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نظرثانی کیس کاتحریری فیصلہ
  • بریکنگ :- عدالت نے 9 ماہ 2 دن بعدنظرثانی درخواستوں کاتحریری فیصلہ جاری کیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:جسٹس یحییٰ آفریدی نےاضافی نوٹ تحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:سریناعیسیٰ کی نظرثانی درخواستیں اکثریت سےمنظور،فیصلہ
  • بریکنگ :- 10رکنی لارجربنچ کا 4-6 کےتناسب سے سریناعیسیٰ کےحق میں فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:سپریم کورٹ نے مختصر فیصلہ 26 اپریل 2021 کو سنایا تھا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:فیصلہ جسٹس مقبول باقر،جسٹس مظہرعالم نےتحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:فیصلہ جسٹس منصورعلی شاہ،جسٹس امین الدین نےتحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:عدالت کےجج سمیت کوئی قانون سےبالاترنہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:کسی کوبھی قانونی حق سےمحروم نہیں کیاجاسکتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- جج کوڈآف کنڈکٹ کےمطابق اہلخانہ کےمعاملات پرجوابدہ نہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- جج اپنی اہلیہ اوربچوں کےمعاملات کاذمہ دارنہیں ہوتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:ہرشخص کواپنےکیےاعمال کاحساب دیناہوتاہے،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:کسی اورکی غلطی پردوسرےکوسزانہیں دی جاسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ یاکوئی ادارہ سپریم جوڈیشل کونسل کوکارروائی کانہیں کہہ سکتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- صدرمملکت کی سفارش کےبغیرسپریم جوڈیشل کونسل کارروائی نہیں کرسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- بعض اوقات ججزکی ساکھ متاثرکرنےکی کوششیں ہوتی ہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ ازخودنوٹس کااختیارسپریم جوڈیشل کونسل پراستعمال نہیں کرسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ کاسپریم جوڈیشل کونسل کوحکم آرٹیکل 211 کی خلاف ورزی ہے،فیصلہ
  • بریکنگ :- ججزکےپاس اپنی صفائی پیش کرنےکیلئےعوامی فورم بھی نہیں ہوتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- ایسی صورتحال میں عدلیہ کی بطورآئینی ادارہ ساکھ متاثرہوتی ہے،فیصلہ

سائیبیریا: ڈیم ٹوٹ گیا، سونے کی کان میں کام کرنیوالے 15 مزدور ہلاک

Last Updated On 19 October,2019 06:18 pm

ماسکو: (ویب ڈیسک) سائیبیریا میں ڈیم ٹوٹنے وجہ سےسونے کی کان میں کام کرنے والے 15 مزدور زندگی کی بازی ہار گئے۔

برطانوی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق واقعہ آج سائبیرین شہر کراسنویارسک سے 160 کلومیٹر کے فاصلے پر پیش آیا۔اس واقعہ میں 15 افراد زندگی کی بازی ہار گئے ہیں۔

خبر رساں ادارے کے مطابق اس واقعہ میں چودہ کے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں، جبکہ ایک درجن سے زائد کان کن تاحال لاپتہ ہیں۔ مقامی میڈیا نے بتایا ہے کہ تیز بارشيں، ڈيم گرنے کی وجہ بنيں۔

روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے واقعے کا فوری نوٹس لیتے ہوئے احکامات جاری کیے ہیں کہ امدادی کارروائیوں جلد سے جلد شروع کی جائیں، اس سانحے میں متاثر ہونے والوں کی جلد سے جلد مدد کی جائے۔

روسی صدر کے ترجمان دیمتری پیسکووو کے مطابق صدر کی جانب سے ملنے والی ہدایات کے بعد فوری طور پر کارروائیاں شروع کردی گئی ہیں، جس جگہ حادثہ ہوا اس کے قریبی علاقے کو شہریوں سے خالی کرا لیا گیا ہے۔