تازہ ترین
  • بریکنگ :- پرویزالہٰی نےگجرات سےغنڈےبلوائے،تصاویرموجودہیں،عطاتارڑ
  • بریکنگ :- پرویزالہٰی کےغنڈوں نےپنجاب اسمبلی پرقبضہ کیاہواہے،عطاتارڑ
  • بریکنگ :- ایک تصویر ابھی جاری کرنےجارہاہوں،عطاتارڑ
  • بریکنگ :- آپ نےکئی باراجلاس ملتوی کیا،عطاتارڑ
  • بریکنگ :- میڈیااورایم پی ایزکواسمبلی کےاندرجانےکی اجازت نہیں دی جارہی،عطاتارڑ
  • بریکنگ :- جب اجلاس بلایاگیاہےتوہررکن کوشرکت کی اجازت ہے،عطاتارڑ
  • بریکنگ :- ہم سب مل کراسمبلی کےدروازے کھلوائیں گے،عطاتارڑ
  • بریکنگ :- ہم نہیں چاہتے کوئی جھگڑاہو،حسن مرتضیٰ
  • بریکنگ :- ہماری کسی سےذاتی لڑائی نہیں،حسن مرتضیٰ
  • بریکنگ :- ہم پارلیمنٹ ضرورجائیں گے،حسن مرتضیٰ

تیل کمپنیاں 24 گھنٹے میں صورتحال معمول پر لائیں: وزارت پٹرولیم

Last Updated On 10 June,2020 12:06 pm

اسلام آباد: (روزنامہ دنیا) وزارت پٹرولیم نے پٹرول بحران کی ذمہ دار آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کو ایک بار پھر سخت تنبیہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اگلے 24 گھنٹے کے اندر پٹرو ل پمپوں پر مصنوعات کی صورتحال معمول پر لائیں ورنہ وزارت خلاف ورزی کرنے والی کمپنیوں کے لائسنسوں کی منسوخی کیلئے ریفرنس اوگرا کو بھجوانے پر مجبور ہوگی جبکہ وزارت پٹرولیم نے نجی آئل مارکیٹنگ کمپنیوں پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ جان بوجھ کر ذخیرہ اندوزی کر رہی ہیں۔

ڈائریکٹر جنرل (آئل) کی طرف سے لکھے گئے ایک اور مراسلہ میں او سی اے سی کو کہا گیا ہے کہ چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا کی رپورٹ کے مطابق صوبہ کے کل 1508 پٹرول پمپوں میں سے 1152 پٹرول پمپ مصنوعات سے خالی ہیں جوکہ کل پٹرول پمپوں کا 77 فیصد ہیں۔ آئل مارکیٹنگ کمپنیاں اپنے پٹرول پمپوں کو مکمل بھریں، اگر وہ ا یسا کرنے میں ناکام رہیں تو وزارت اوگرا کو ان کمپنیوں کے مارکیٹنگ لائسنس کی منسوخی کیلئے ریفرنس بھجوانے پر مجبور ہو جائے گی۔