تازہ ترین
  • بریکنگ :- لاہورہائیکورٹ نےتحریری فیصلہ جاری کردیا
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب یکم جولائی شام 4 بجےاجلاس بلائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- اجلاس میں دوبارہ گنتی ہوگی،لاہورہائیکورٹ کافیصلہ
  • بریکنگ :- تمام ادارےعدالتی احکامات کی پاسداری کرائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- وزیراعلیٰ کےانتخاب کاعمل مکمل کیےبغیراجلاس ملتوی نہیں ہوگا،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرآرٹیکل 130 کی شق 5 کےتحت اپنےفرائض سرانجام دیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب نومنتخب وزیراعلیٰ سےحلف لیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرانتخابی عمل سےاگلےروز 11 بجےتک حلف لینےکےپابندہوں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب الیکشن کنڈکٹ سےمتعلق اپنی رائےنہیں دیں گے،فیصلہ

کوئٹہ: حکومت کو گھر بھیجنے کی دعویدار پی ڈی ایم کی مرکزی پارٹیاں اختلافات کا شکار

Published On 23 December,2020 06:26 pm

کوئٹہ: (دنیا نیوز) بلوچستان میں حکومت کو گھر بھیجنے کی دعویدار پی ڈی ایم کی مرکزی پارٹیاں خود اختلافات کا شکار ہو گئیں۔ جے یو آئی کے اندرونی اختلافات مزید بڑھنے لگے۔ حافظ حسین احمد سمیت دیگر سینئر قائدین نے قیادت کے خلاف اقدامات تیز کر دیئے۔

تفصیل کے مطابق بلوچستان میں متحدہ اپوزیشن جو گزشتہ کئی ماہ سے صوبے میں مخلوط حکومت کو گھر بھیجنے کا دعویٰ کر رہی تھی، ان دنوں خود ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے۔

پی ڈی ایم کے کوئٹہ میں ہونے والے جلسے کے بعد (ن) لیگ کے صوبائی رہنماؤں نے مرکزی قیادت کے خلاف علم بغاوت کیا تو کچھ ہی عرصہ بعد جے یو آئی کے سینئر رہنماؤں مولانا محمد خان شیرانی اور حافظ حسین نے بھی مولانا فضل الرحمان پر سنگین الزامات لگانے میں دیر نہیں کی۔

بلوچستان کی مخلوط حکومت میں شامل سیاسی جماعتیں اپوزیشن کے اندورنی اختلافات کو پی ڈی ایم کی ناکامی قرار دے رہی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حکومت کو گرانے والے خود عوام اور اپنے کارکنوں کی نظروں میں گر رہے ہیں۔

اس صورتحال پر اپوزیشن کا کہنا ہے کہ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت پی ڈٰی ایم میں شامل جماعتوں میں اختلافات کو ہوا دے کر حکومت کے خلاف جاری تحریک کو کمزور کرنے کی ناکام کوشش کی جا رہی ہے۔