تازہ ترین
  • بریکنگ :- صدرعارف علوی کی فوجی قافلےپرخودکش حملےکی مذمت
  • بریکنگ :- ایسےبزدلانہ حملےہمارےعزم کوکمزورنہیں کرسکتے،صدرمملکت
  • بریکنگ :- وزیراعظم کی میرعلی میں فوجی قافلےپرخودکش حملےکی مذمت
  • بریکنگ :- خودکش حملےمیں 4 جوانوں کی شہادت پردلی دکھ اوررنج ہوا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- دہشتگری کےخاتمےتک پوری قوم متحدہوکراس کامقابلہ کرتی رہےگی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- دہشتگردوں کےناپاک عزائم کبھی کامیاب نہیں ہوں گے،شہبازشریف
  • بریکنگ :- پوری قوم شہیدجوانوں کوخراج عقیدت پیش کرتی ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- وزیرداخلہ کی شمالی وزیرستان میں فوجی قافلےپرخودکش حملےکی مذمت
  • بریکنگ :- وطن کی خاطرجان دینےوالےفوجی جوانوں کوخراج عقیدت پیش کرتاہوں،وزیرداخلہ
  • بریکنگ :- سکیورٹی فورسزایسےبزدلانہ حملوں سےخوفزدہ نہیں ہوں گی،راناثنااللہ
  • بریکنگ :- وطن کی حفاظت کی خاطرکسی بھی قربانی سےدریغ نہیں کریں گے،وزیرداخلہ
  • بریکنگ :- شرجیل میمن کی پاک فوج کےقافلےپرخودکش حملےکی مذمت
  • بریکنگ :- پاک فوج کےبہادرشہداکوخراج عقیدت پیش کرتےہیں،شرجیل میمن
  • بریکنگ :- جوانوں نےدفاع وطن کیلئےاپنی جانوں کانذرانہ پیش کیا،شرجیل میمن
  • بریکنگ :- دشمنوں کےناپاک عزائم کامیاب نہیں ہوں گے،شرجیل میمن
  • بریکنگ :- وزیراعلیٰ سندھ کی پاک فوج کےقافلےپرخودکش حملےکی مذمت
  • بریکنگ :- دہشتگردوں کےبذدلانہ حملےقوم کوڈرانہیں سکتے،مرادعلی شاہ

صدارتی آرڈیننس سے سینیٹ الیکشن کا طریقہ کار بدل نہیں سکتا، مولانا فضل الرحمان

Published On 16 December,2020 05:46 pm

بہاولپور: (دنیا نیوز) پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ صدارتی آرڈیننس سے سینیٹ الیکشن کا طریقہ کار بدل نہیں سکتا، شو آف ہینڈ کے ذریعے سینیٹ کا الیکشن غیر آئینی ہے۔

یہ بات انہوں نے بہاولپور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ حکومت نے اعلان کیا ہے کہ ہم سینیٹ کا الیکشن فروری میں کرائیں گے جبکہ ووٹنگ شو آف ہینڈ سے ہوگی۔ الیکشن کرانا ایکشن کمشن کا کام ہے، جعلی وزیراعظم کو کس نے اختیار دیا ہے کہ وہ اعلان کرے۔ الیکشن کمیشن اگر آزاد ہے تو فوری نوٹس لے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ شو آف ہینڈ کے ذریعے سینیٹ کا الیکشن غیر آئینی ہے۔ کورٹ آئین کی تشریح تو کر سکتی ہے لیکن اسے تبدیل نہیں کر سکتی۔ یہ ممکن ہی نہیں کہ شو آف ہینڈز کیساتھ الیکشن کرائے جائیں۔ لگتا ہے پوری کابینہ ہی جاہل ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس قسم کے اقدامات سے گریز کیا جائے جس سے نفرت میں اضافہ ہو۔ ہم ہر قمیت پر ووٹ کا حق چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میرے خلاف جو باتیں کرنے والے عدالت جائیں گے تو اپنا ہی نقصان کریں گے۔ ہم کچھ چیزوں کا وقت پر استعمال کریں گے۔ ہمارے پاس 3 ماہ لانگ مارچ کی تیاری کے لئے ہیں۔ عوام کی۔کیفیت کا حکومت کو اندازہ ہی نہیں ہے۔