تازہ ترین
  • بریکنگ :- سیلانی ٹرسٹ کاقوم کی طرف سےشکریہ اداکرتاہوں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پاکستان کےلوگ دنیامیں سب سےزیادہ خیرات دیتےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ریاست کی ذمہ داری ہےکہ وہ کمزورطبقےکواوپراٹھائے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پورے ملک میں میلز آن ویلزکاجال بچھائیں گے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ثانیہ نشترکوکوئی بھوکانہ سوئےپروگرام کی تجویزدی تھی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پروگرام سےمستحق اورپسماندہ طبقہ مستفیدہوسکےگا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- لوگوں کوروٹی ملےگی توملک میں برکت آئےگی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- کینسراسپتال شروع کیاتولوگوں نےکہایہ نہیں چلےگا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- شوکت خانم اسپتال کاپہلاچیف ایگزیکٹو 3 ماہ بعدچھوڑگیاتھا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پشاورکےبعدکراچی میں بھی کینسراسپتال بنارہےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- کینسراسپتال میں غریبوں کےعلاج پر 50 ارب خرچ کرچکے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پہلی بارپاکستان کی تاریخ میں پناہ گاہیں بنیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پہلی باریونیورسل ہیلتھ کوریج پروگرام شروع کیا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اب ملک میں اسپتالوں کاجال بچھےگا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- ہیلتھ کارڈ سےاسپتال بھی ا پنامعیاربہترکریں گے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- حکومت قانون کی بالادستی کیلئےتاریخی جنگ لڑرہی ہے،وزیراعظم

پاکستان کے کسی بھی ملک کیخلاف کوئی جارحانہ عزائم نہیں، آرمی چیف

Published On 07 April,2021 05:20 pm

راولپنڈی: (دنیا نیوز) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان کسی بھی ملک کیخلاف جارحانہ عزائم نہیں رکھتا۔ باہمی ترقی، خود مختاری اور برابری کی بنیاد پر خطے میں بہتری کے لئے کام کرتے رہیں گے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق آرمی چیف نے یہ بات دورہ پاکستان پر آئے روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف کیساتھ اہم ملاقات کے موقع پر کہی۔

جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ پاکستان خطے میں امن کیلئے ہر کوشش کا خیر مقدم کرتا ہے۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ پاکستان روس کے ساتھ اپنے تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے۔ دونوں ممالک کی مسلح افواج کے درمیان تعاون بڑھانا چاہتے ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے کہا کہ مختلف شعبوں میں پاک روس تعلقات مثبت انداز میں آگے بڑھ رہے ہیں۔

دونوں رہنماؤں کے درمیان ملاقات میں افغان امن عمل، پاکستان اور روس کے درمیان سیکورٹی اور دفاع کے شعبوں میں تعاون بڑھانے اور باہمی دلچسپی کے امور پر بات چیت کی گئی۔