تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزیر مملکت اطلاعات ونشریات فرخ حبیب کایوم استحصال کےموقع پرپیغام
  • بریکنگ :- پاکستان نےبھارتی مظالم کوپوری دنیامیں بےنقاب کیا،فرخ حبیب
  • بریکنگ :- وزیراعظم نےعالمی سطح پرمسئلہ کشمیرکواجاگرکیا،وزیرمملکت
  • بریکنگ :- وزیراعظم نےکشمیرکےسچےوکیل اوردلیرسفیرہونےکاحق اداکیا،فرخ حبیب
  • بریکنگ :- کشمیرکی آزادی کےلیےحریت رہنماؤں نےقربانیاں دیں،وزیرمملکت
  • بریکنگ :- پاکستان ہرفورم پرکشمیریوں کےلیےآوازبلندکرتارہےگا،فرخ حبیب

وزیراعظم کی 24 لاکھ 41 ہزار روپے ماہانہ تنخواہ کی خبریں جعلی قرار

Published On 12 June,2021 10:46 pm

لاہور: (ویب ڈیسک) سوشل میڈیا پر خبریں وائرل ہو رہی ہیں کہ وزیراعظم عمران خان کو 24 لاکھ 41 ہزار روپے ماہانہ تنخواہ ملے گی، یہاں بتاتے چلیں کہ یہ خبر جعلی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر خبریں چل رہی ہیں جسے دیکھا جا سکتا ہے کہ اے میرے مزدورو، کلرکو، استادو، وزیراعظم عمران خان کی تنخواہ آٹھ لاکھ نہیں ہے،بجٹ دستاویزات کے مطابق ان کی تنخواہ 24 لاکھ 41ہزار روپے ماہانہ ہو گئی ہے(جو سابق دور میں غالباً دو لاکھ تھی) ۔

وائرل ہونے والی خبر میں لکھا ہے کہ قومی اخبارات کے مطابق وزیراعظم کے دفتر کے اخراجات بھی 18 کروڑ 40 لاکھ سے زائد کا اضافہ کیا گیا ہے۔

یہاں بتاتے چلیں کہ یہ خبریں جعلی ہیں کیونکہ وزیراعظم عمران خان کو 24 لاکھ 41 ہزار تنخواہ ماہانہ نہیں بلکہ سالانہ ملے گی۔

بجٹ دستاویزات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کو سالانہ 24 لاکھ 41 ہزار روپے تنخواہ ملے گی۔ اس کے لیے وفاقی بجٹ میں رقم مختص کر دی گئی۔

وفاقی بجٹ 2021-22 کی دستاویزات کے مطابق وزیر اعظم آفس اخراجات کے لیے 46 کروڑ 10لاکھ روپے مختص کرنے کی تجویز ہے۔ اس کے علاوہ صدر مملکت کے آفس ملازمین کی تنخواہوں اور دیگر اخراجات کے لیے 40 کروڑ پچاس لاکھ روپے رکھے گئے ہیں۔