تازہ ترین
  • بریکنگ :- بلاول بھٹوکی چینی ہم منصب وانگ ژی کیساتھ مشترکہ پریس کانفرنس
  • بریکنگ :- بطوروزیرخارجہ چین کےپہلےدورےپرانتہائی مسرت ہے،بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- دوطرفہ تعلقات کی 71ویں سالگرہ کےموقع پردورہ انتہائی اہمیت کاحامل ہے،بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- چین کی قیادت اورعوام کیلئےنیک خواہشات کاپیغام لایاہوں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاک چین دوستی نہ صرف علاقائی بلکہ عالمی امن کیلئےبھی ضروری ہے، وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان چین کیساتھ اسٹریٹجک تعلقات کوبہت اہمیت دیتاہے، وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاک چین لازوال دوستی وقت کیساتھ مزیدمضبوط ہورہی ہے، بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- پاکستان خطےمیں امن کاخواہاں ہے،وزیرخارجہ بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- پاکستان چینی شہریوں پرحالیہ دہشتگردحملےکی مذمت کرتاہے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- چینی شہریوں پرحملہ کرنیوالوں کوکٹہرےمیں لائیں گے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- کسی کوپاک چین دوستی کونقصان پہنچانےکی اجازت نہیں دیں گے،وزیرخارجہ

براڈ شیٹ سکینڈل کی تحقیقات جسٹس (ر) عظمت ہی کریں گے، تعیناتی کا نوٹیفکیشن جاری

Published On 30 January,2021 11:09 am

اسلام آباد: (دنیا نیوز) براڈشیٹ سکینڈل کی تحقیقات کیلئے ایک رکنی کمیشن کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا۔ جسٹس ریٹائرڈ عظمت سعید کو افسران اور ماہرین پر مشتمل کمیٹیاں بنانے کا اختیار ہوگا، کمیشن تقرری اور معاہدوں کی چھان بین کرے گا۔

 ایک رکنی تحقیقاتی کمیشن براڈ شیٹ اور آئی اے آر کے انتخاب، تقرری کے عمل اور معاہدوں کی چھان بین کرے گا۔ کمیشن 2003 میں براڈشیٹ اور آئی اے آر کے ساتھ معاہدوں کی منسوخی کی وجوہات اور اثرات کی جانچ پڑتال بھی کرے گا۔

2008 میں براڈ شیٹ کو پاکستان کی جانب سے کی گئی ادائیگیوں کی وجوہات اور اثرات کی نشاندہی بھی ہوگی۔ کمیشن یہ بھی دیکھے گا کہ 2008 میں کی گئی ادائیگی جائز تھی، دعویدار کو ادائیگی کرنے کا عمل قانونی اور مقررہ قواعد کے مطابق تھا۔ کمیشن اس بات کو بھی دیکھے گا کہ آیا لندن عدالتوں کے سامنے کیس موثر طریقے سے لڑا گیا۔ 1.5 ملین ڈالر کی غلط ادائیگی کرنے کے ذمہ دار افراد یا عہدیداروں کی نشاندہی بھی کرے گا۔

کمیشن اس بات کی تحقیق بھی کرے گا کہ غیر قانونی طور پر حاصل شدہ اثاثوں کی ریکوری کے لیے دائر کیسز کیوں بند کیے گئے، ایک رکنی کمیشن غفلت یا بدانتظامی کے مرتکب کسی بھی فرد یا اتھارٹی کی ذمہ داری کی نشاندہی بھی کرے گا۔ کمیشن سے کیسز بند کرنے کے نتیجے میں ملک کو ہونے والے مالی نقصان کا تعین بھی ہوگا۔