تازہ ترین
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکےمزید567 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 12 لاکھ 67 ہزار 393 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹےکےدوران کوروناسےمزید 16 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 28 ہزار 344 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 39 ہزار 200 کوروناٹیسٹ کیےگئے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر1704 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 1.44 فیصدرہی،این سی اوسی

سفر کے دوران الٹیاں کیوں آتی ہیں؟

Published On 09 September,2021 04:26 pm

لاہور: (نیٹ نیوز) کچھ لوگ اس بات سے بہت پریشان ہوتے ہیں کہ ان کو گاڑیوں میں سفر کے دوران الٹیاں کیوں شروع ہو جاتی ہیں؟

دراصل سفر کرتے وقت چکر آنے یا الٹیاں آنے کی وجہ یہ سمجھی جاتی ہے کہ سفر کے دوران دماغ کو جسم کے مختلف حصوں سے متضاد معلومات ملنا شروع ہو جاتی ہیں۔

جب ہم پیدل چلتے ہیں تو ہماری آنکھیں، ٹانگیں، پاؤں، بازو اور کانوں کے اندر موجود توازن کا نظام سب دماغ کو یہ اطلاع دیتے ہیں کہ ہم حرکت میں ہیں۔

اس کے برعکس اگر آپ بس میں ہوں، تو آپ کے کانوں کے اندر بیلنسنگ کا نظام دماغ کو یہ بتا تا ہے کہ آپ حرکت میں ہیں، لیکن جسم دماغ کو یہ بتاتا ہے کہ آپ ساکن ہیں۔

لیکن یاد رہے کہ آپ کو چکر اور وومٹنگ صرف اس وقت آتے ہیں جب آپ تیزی سے تبدیل ہوتے منظر پر توجہ دیتے ہیں۔
اگر آپ گاڑی کے پردے بند رکھیں اور باہر کے منظر پر توجہ نہ دیں تو چکر آئیں گے اور نہ ہی الٹیاں۔