تازہ ترین
  • بریکنگ :- کرپشن پرسیپشن انڈیکس میں پاکستان دنیامیں 140ویں نمبرپرآگیا،ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل
  • بریکنگ :- ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے 180ممالک کاکرپشن پرسیپشن انڈیکس جاری کردیا
  • بریکنگ :- 2020میں پاکستان کانمبردنیامیں 124واں تھا،ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل
  • بریکنگ :- 2020میں کرپشن پرسیپشن انڈیکس میں پاکستان کااسکور 31تھا،ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل
  • بریکنگ :- 2021میں کرپشن پرسیپشن انڈیکس میں پاکستان کااسکور 28ہوگیا،ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل
  • بریکنگ :- پاکستان میں کرپشن مزیدبڑھ گئی،ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل
  • بریکنگ :- پاکستان کرپشن رینکنگ میں 16 درجےاوپرچلاگیا،ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل
  • بریکنگ :- کرپشن پرسیپشن انڈیکس میں اسکورکم ہوناکرپشن میں اضافےکوظاہرکرتاہے

استعفوں کے بغیر لانگ مارچ کی زیادہ افادیت نہیں ہوگی، مولانا فضل الرحمان

Published On 15 March,2021 05:13 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ اگر استعفے نہ دیئے گئے تو لانگ مارچ کی زیادہ افادیت نہیں ہوگی۔

یہ بات انہوں نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی۔ سینیٹ الیکشن میں اداروں کی مداخلت کا الزام عائد کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نیب دیگر ان کا ترجمان بن کر ہمارے موقف کی تصدیق کر رہا ہے۔ پوری قوم نے دیکھا کہ سینیٹ کے ایوان میں کیمرے کس نے لگائے۔

مولانا فضل الرحمان نے سوال اٹھایا کہ ہمارے جائز ووٹ کو کیوں مسترد کیا گیا؟ اب ووٹ مسترد ہونے کا ملبہ بھی عدالتوں پر ڈال دیا گیا۔ ان کا کہنا تھا کہ نیب نے مریم نواز کی ضمانت منسوخی کیلئے عدالت سے رجوع کر لیا ہے جبکہ انھیں دھمکیاں بھی دی جا رہی ہیں۔

پی ڈی ایم سربراہ کا کہنا تھا کہ نیب کٹھ پتلی ادارہ ہے۔ ملکی سیاست پاکستان کے آئین کے مطابق نہیں چل رہی۔ موجودہ حکومت نے معیشت کو تباہ کر دیا ہے۔

انہوں نے منگل کے روز پی ڈی ایم اجلاس کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمنٹ سے استعفے نہیں دیتے تو لانگ مارچ کی زیادہ افادیت نہیں ہوگی۔