تازہ ترین
  • بریکنگ :- ایف اےٹی ایف کاپیرس میں اجلاس
  • بریکنگ :- پاکستان بلیک لسٹ نہیں ہوگا،صدرایف اےٹی ایف
  • بریکنگ :- پاکستان گرےلسٹ میں رہےگا،صدرایف اےٹی ایف
  • بریکنگ :- پاکستان نےنئےایکشن پلان پربہترعملدرآمدکیا،صدرایف اےٹی ایف
  • بریکنگ :- پاکستان نے 27میں سے 26 اہداف پورےکیے،مارکس پلیئر
  • بریکنگ :- پاکستان نےایشیاپیسفک گروپ کے 34میں سے 30اہداف پرعمل کیا،مارکس پلیئر
  • بریکنگ :- پاکستان میں مانیٹرنگ کانظام بہترہواہے،صدرایف اےٹی ایف
  • بریکنگ :- پاکستان کواینٹی منی لانڈرنگ قوانین پرعملدرآمدمزیدبہتربناناہوگا،مارکس پلیئر
  • بریکنگ :- منی لانڈرنگ کی روک تھام کیلئےمشترکہ کوششیں کررہےہیں،مارکس پلیئر
  • بریکنگ :- منی لانڈرنگ کی روک تھام میں پنڈوراپیپرزنےبھی معاونت کی،مارکس پلیئر
  • بریکنگ :- آف شورکمپنیوں میں سرمایہ کی جانچ پڑتال کی جارہی ہے،صدرایف اےٹی ایف
  • بریکنگ :- آف شورکمپنیوں میں منی لانڈرنگ کےسرمائےکاجائزہ لیں گے،مارکس پلیئر
  • بریکنگ :- مالی،اردن اورترکی نےمانیٹرنگ نظام بہترکیاہے،صدرایف اےٹی ایف
  • بریکنگ :- ترکی کومنی لانڈرنگ کیخلاف قوانین پرعملدرآمدبہترکرناہوگا،مارکس پلیئر

چترال میں 46 افغان سپاہیوں کو محفوظ راستہ اور پناہ کی فراہمی: آئی ایس پی آر

Published On 26 July,2021 12:05 pm

راولپنڈی: (دنیا نیوز) پاکستان اور افغانستان کے بھائی چارے کی ایک اور زندہ مثال، پناہ کیلئے رابطہ کرنے والے افغان آرمی کے کمانڈر کی 5 افسروں سمیت 46 اہلکاروں کو پناہ دے دی گئی۔ جلد با وقار انداز میں افغان حکام کے حوالے کر دیا جائے گا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق چترال کے ارندو سیکٹر کے پاس پاک افغان بارڈر پر تعینات افغان فوجی کمانڈر نے پناہ کیلئے پاک فوج کے ساتھ رابطہ کیا، مقامی کمانڈر نے افغان فوج اور بارڈر پولیس کے 5 افسروں سمیت 46 اہلکاروں کیلئے پناہ اور محفوظ راستے کی درخواست کی۔ افغان فوجی انٹرنیشنل بارڈر پر اپنی پوسٹوں کا تحفظ کرنے میں ناکام ہو رہے تھے اور سیکیورٹی صورتحال کی وجہ سے اپنی چوکی پر مزید کنٹرول جاری رکھنے کے قابل نہیں رہے۔

مقامی افغان کمانڈر کی درخواست کے فوری بعد پاک فوج کی طرف سے رسمی کارروائی کیلئے افغان حکام سے رابطہ کیا اور افغان فوجیوں کو ارندو سیکٹر سے پاکستان میں داخل ہونے کی اجازت دے دی گئی۔ تمام 46 اہلکاروں و افسروں کو پناہ فراہم کرنے سمیت فوجی روایات کے مطابق افغان اہلکاروں کو خوراک اور ضروری طبی سہولیات فراہم کی گئیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق جلد باضابطہ اور باوقار طریقہ کار کے تحت ان اہلکاروں کو افغان حکام کے حوالے کر دیا جائے گا۔

اس سے قبل بھی یکم جولائی کو 35 افغان فوجیوں نے بارڈر پر پاک فوج سے پناہ طلب کی تھی، جس پر ان اہلکاروں کو بھی محفوظ پناہ فراہم کرنے کے بعد مروجہ طریقہ کار کے تحت افغان حکام کے حوالے کر دیا گیا تھا۔