تازہ ترین
  • بریکنگ :- سندھ حکومت اور جماعت اسلامی کےدرمیان تحریری معاہدہ
  • بریکنگ :- جماعت اسلامی کا دھرنا ختم کرنے کا اعلان،کارکنان گھروں کو روانہ
  • بریکنگ :- کراچی: آج کے اعلان کیے گئے دھرنے بھی ختم کر دیئے ہیں،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- آپ کو تاریخی جدوجہد کرنے پرمبارکباد پیش کرتا ہوں،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- آپ نے ساڑھے تین کروڑ عوام ہی نہیں پورے ملک کو حیران کردیا،حافظ نعیم
  • بریکنگ :- ہم استقامت کے ساتھ 29 دن دھرنے پر بیٹھے رہے،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- کراچی:سندھ حکومت اور جماعت اسلامی نے مل کر ایک مسودہ بنایا ہے،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- کراچی:2021 کا ترمیمی بل اب ختم ہو جائےگا،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- آج میڈیا کے سامنے وزیر بلدیات نے ہمارے مطالبات تسلیم کیے،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- ہم اس معاہدے پر عمل بھی کروائیں گے،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- سندھ حکومت تعلیمی ادارے اور اسپتال بلدیہ کو واپس کرنے پر تیار،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- آکٹرائے اور موٹر وہیکل ٹیکس میں سےبھی بلدیہ کراچی کو حصہ ملے گا،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- کراچی: مئیر کراچی واٹر بورڈ کے چیئرمین ہوں گے،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- بلدیہ کو خود مختار بنانے کیلئےمالی وسائل دینےپر سندھ حکومت تیار، ناصر حسین
  • بریکنگ :- کراچی: بلدیاتی قانون پر جماعت اسلامی اور سندھ حکومت کے مذاکرات کامیاب
  • بریکنگ :- کراچی:صوبائی فنانس کمیشن کے قیام پر رضامندہیں،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- مئیر اور ٹاؤن چیئرمین کمیشن کے ممبر ہوں گے،ناصر حسین شاہ

پنجاب کا نیا بلدیاتی نظام،پی ٹی آئی اور ق لیگ میں معاملات طے

Published On 02 December,2021 04:19 pm

لاہور:(دنیا نیوز)پنجاب کے نئے بلدیاتی نظام کے معاملے پر تحریک انصاف اور مسلم لیگ ق میں بریک تھرو ہوگیا اور دونوں اتحادیوں میں معاملات طے پا گئے ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان مسلم لیگ (ق) میں مشاورت سے بلدیاتی نظام کا نیا سیٹ اپ طے پا گیا ہے جس کے مطابق پنجاب میں 11میٹرو پولٹین کارپوریشنز ہوں گی ،9ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز پر میٹرو پولٹین کارپوریشنز ہوں گی۔

گجرات اور سیالکوٹ میں بھی میٹرو پولیٹن کارپوریشنز ہوں گی ،میٹرو پولیٹن میں لارڈ میئر ہوگا ،پنجاب کے باقی 25اضلاع میں ڈسٹرکٹ کونسلز ہوں گی ،ڈسٹرکٹ کونسلز کے سربراہ ڈسٹرکٹ میئر ہوں گے جبکہ نچلی سطح پر نیبر ہڈ اور ویلیج کونسل ہوں گی۔

تحصیل کونسلز اور میونسپل کارپوریشنز نہیں ہوں گی،میونسپل کمیٹیز اور ٹاؤن کمیٹیاں بھی نہیں ہوں گی، بلدیاتی نظام کے دوسرے سیٹ اپ ختم کر دیئے گئے ہیں اورصرف میٹرو پولیٹن، ڈسٹرکٹ کونسل،ویلیج کونسل اور نیبر ہڈ کونسل ہوں گی۔

قبل ازیں پنجاب میں بلدیاتی ایکٹ پر مسلم لیگ ق کے تحفظات کے معاملے پر چار دن گزر جانے کے باوجود ڈیڈ لاک ختم نہ ہوسکے تھے۔

وفاقی وزرا نے مسلم لیگ ق کےتحفظات اورتجاویز وزیراعظم کو پہنچادیں ،سیکرٹری بلدیات کی دو بار قائم مقام گورنرپنجاب سے ملاقاتیں ہوچکی ہیں جبکہ وزیراعلیٰ کی زیرصدارت ڈیڈلاک کے خاتمے کے لئے بھی دواجلاس ہوچکے تھے۔

ویڈیو لنک پر اتحادی قیادت ،وفاق اورپنجاب کی سطح پر میٹنگ بھی ہوچکی ہے، مسلم لیگ ق بلدیاتی اداروں میں دیہی نمائندگی بڑھانے کے لئے کوشاں ہے اورمسلم لیگ ق تحصیل کونسل کے نظام کو بلدیاتی ایکٹ کاحصہ بنانا چاہتی تھی۔

مسلم لیگ ق نے سیمی اربن نمائندگی زیادہ ہونے پر تحفظات کااظہار کیا اور باضابطہ حکومت پنجاب کو اپنی تجاویز دے چکی ہے جبکہ بلدیاتی ایکٹ پر حکومت پنجاب اور مسلم لیگ ق کے مذاکرات کے کئی دور کامیاب نہ ہوسکے تھے۔