تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزیراعظم کی سیاسی قیادت سےمشاورت کےبعداہم فیصلوں کی منظوری
  • بریکنگ :- بیوروکریسی کےعدم تعاون کےمسئلےکےحل کی تجویز،پارٹی سفارشات منظور
  • بریکنگ :- حکومت اوربیوروکریسی کامل کرعوامی سطح پرڈلیورکرنےکامیکانزم تیار
  • بریکنگ :- صوبائی اورضلعی سطح پرکوآرڈینیشن کمیٹیاں تشکیل دی جائیں گی
  • بریکنگ :- صوبائی وضلعی انتظامیہ،پارٹی عہدیداروں کوشامل کرنےکی منظوری
  • بریکنگ :- ارکان پارلیمنٹ اورٹکٹ ہولڈرزکوکمیٹیوں میں شامل کرنےکی منظوری
  • بریکنگ :- کوآرڈینیشن کمیٹیاں انتظامی امورپرمشاورت سےفیصلےکریں گی
  • بریکنگ :- حکومتی بورڈزمیں اعزازی عہدوں پرپارٹی رہنماؤں کی تقرریاں ہوں گی
  • بریکنگ :- لاہور:میرٹ پرکوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پارٹی رہنماؤں نےبیوروکریسی کےعدم تعاون سےمتعلق آگاہ کیا
  • بریکنگ :- ہمیں ڈلیورکرناہےہرعہدیدارکوکارکردگی دکھاناہوگی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- وزیراعظم عمران خان سےپارٹی کی اہم سیاسی قیادت کی ملاقات

بھارتیوں کے نیوزی لینڈ میں داخلے پر پابندی لگ گئی

Published On 08 April,2021 05:01 pm

ولنگٹن: (ویب ڈیسک) بھارت میں بڑھتے ہوئے کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد کے بعد نیوزی لینڈ نے وہاں سے آنے والے مسافروں کے ملک میں داخلے پر پابندی لگا دی ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں کورونا وائرس کے کیسز میں تیزی سے اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے جبکہ گزشتہ 3 دنوں سے روزانہ ایک لاکھ سے زائد کیسز رپورٹ ہورہے ہیں جبکہ نیوزی لینڈ نے ملک سے کورونا ختم ہونے کا اعلان کیا ہے اور گزشتہ 40 دنوں میں مقامی طور پر کورونا کا ایک بھی کیس سامنے نہیں آیا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق بھارت میں کورونا کے بڑھتے کیسز کی وجہ سے نیوزی لینڈ نے وہاں سے آنے والے مسافروں بشمول اپنے شہریوں کے ملک میں داخلے پر 2 ہفتوں کے لیے پابندی لگادی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق یہ اقدام نیوزی لینڈ میں کورونا کے 23 کیسز سامنے آنے کے بعد آیا جن میں سے 17 مریضوں کا تعلق بھارت سے ہے۔

وزیراعظم نیوزی لینڈ جیسنڈا آرڈرن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عارضی طور پر بھارت سے آنے والے مسافروں کے نیوزی لینڈ میں داخلے پر پابندی لگائی ہے جو 11 اپریل سے 28 اپریل تک عائد رہے گی۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں بھارت سے کووڈ کیسز سامنے آنے کے بعد یہ حفاظتی اقدامات لیے گئے ہیں تاہم پابندی کے دوران ہم اس مسئلہ کا حل نکالنے کی کوشش کریں گے۔