تازہ ترین
  • بریکنگ :- پشاورہائیکورٹ بارایسوسی ایشن کامہنگائی میں اضافےپرہڑتال کااعلان
  • بریکنگ :- پشاور:پیرکووکلاعدالتوں میں پیش نہیں ہوں گے،بارایسوسی ایشن
  • بریکنگ :- پشاورہائیکورٹ کےوکلااحتجاجی ریلی بھی نکالیں گے،بارایسوسی ایشن

ویکسین دستیاب ہی نہیں تو آخر عوام کہاں جائیں؟ جنید خان کا اسد عمر سے سوال

Published On 13 July,2021 07:14 pm

لاہور: (ویب ڈیسک) قومی ٹیم کے فاسٹ باؤلر جنید خان نے کورونا ویکسین سے متعلق وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اور سربراہ این سی او سی اسد عمر سے سوالیہ انداز میں پوچھتے ہوئے کہا کہ ویکسین دستیاب ہی نہیں تو آخر عوام کہاں جائیں؟

تفصیلات کے مطابق حکومتی دعووں کے برعکس خیبر پختونخوا اور گلگت بلتستان میں انسدادِ کورونا ویکسین کی عدم فراہمی پر ٹیسٹ کرکٹر جنید خان نے این سی او سی کے سربراہ اسد عمر سے سوال کردیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر وفاقی وزرا کے نام پیغام میں جنید خان نے لکھا کہ اسد عمر کہتے ہیں خیبر پختونخوا اور گلگت میں سیاحوں کے لئے کورونا ویکسین لازمی ہے لیکن شاید شہرام ترکئی، اسد قیصر اور اسد عمر لاعلم ہیں کہ جس ویکسین کو وہ لازمی قرار دے رہے ہیں وہ دستیاب ہی نہیں۔

انہوں نے کہا کہ صوابی مردان اور بونیر میں چھ یا سات ہفتوں پہلے ویکسین کی پہلی خوراک لگوانے والے افراد اب تک دوسری خوراک کے منتظر ہیں۔

فاسٹ بولر جنید خان کے پیغام کے ردعمل میں این سی او سی کی جانب سے جواب میں کہا گیا کہ خیبرپختونخوا میں کورونا ویکسین کی دس لاکھ سے زائد خوراکیں دستیاب ہیں۔ بونیر، صوابی اور مردان تینوں اضلاع میں کم از کم تیس ہزار خوراکوں کا ذخیرہ موجود ہے۔

این سی او سی کے جواب پر جنید خان نے ایک اور پیغام میں کہا کہ ان کی تنقید سیاسی مقاصد کے تحت نہیں، ان اضلاع کے ہسپتالوں میں اگر ویکسین موجود ہے، تو دکھا دیجئے، رابطہ کرنے کے لئے کوئی نمبر ان باکس میں بھیج دیجیے، اگر این سی او سی کے دعوے درست ہوئے تو وہ معافی مانگ لیں گے۔