تازہ ترین
  • بریکنگ :- صدارتی ریفرنس پر سپریم کورٹ کی تحریری رائے جاری
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ کی تحریری رائے 8 صفحات پرمشتمل ہے
  • بریکنگ :- اسلام آباد:رائے تین ،دو کےتناسب سے دی گئی
  • بریکنگ :- جسٹس مندوخیل اورجسٹس مظہرعالم نے اختلاف کیا
  • بریکنگ :- صدارتی ریفرنس اکثریتی رائےسےنمٹایاگیا،سپریم کورٹ
  • بریکنگ :- منحرف ارکان تاحیات نااہلی سے بچ گئے
  • بریکنگ :- منحرف ارکان کی تاحیات نااہلی پرپارلیمنٹ قانون سازی کرے، تحریری رائے
  • بریکنگ :- اس حوالےسےقوانین کوآئین میں شامل کرنےکامناسب وقت ہے،تحریری رائے
  • بریکنگ :- پارلیمنٹ مسئلے کے حل کیلئے قانون سازی کرے، تحریری رائے
  • بریکنگ :- آرٹیکل 63اےسیاسی جماعتوں کوتحفظ فراہم کرتاہے، اکثریتی رائے
  • بریکنگ :- سیاسی جماعتوں کوغیرمستحکم کرناان کی بنیادوں کوہلانےکےمترادف ہے، اکثریتی رائے
  • بریکنگ :- منحرف ارکان کےذریعےہی سیاسی جماعتوں کوغیرمستحکم کیاجاتاہے،اکثریتی رائے
  • بریکنگ :- کسی رکن کومنحرف ہونےسےروکنےکیلئےموثراقدامات کی ضرورت ہے، اکثریتی رائے
  • بریکنگ :- منحرف ارکان کی تاحیات نااہلی کےمعاملےپرقانون سازی کی جائے،سپریم کورٹ
  • بریکنگ :- کسی منحرف رکن کاپارٹی پالیسی کےخلاف ووٹ شمارنہیں ہوگا،سپریم کورٹ
  • بریکنگ :- پارٹی پالیسی کےخلاف جانےوالےرکن کاووٹ مستردتصورہوگا،سپریم کورٹ

مینار پاکستان واقعہ: بزرگ شہری کو گرفتار کرنے والے پولیس اہلکار معطل

Published On 23 August,2021 05:28 pm

لاہور: (دنیا نیوز) پولیس حکام نے مینار پاکستان واقعہ میں ملوث ہونے کے الزام میں بزرگ کو گرفتار کرنے والے اہلکاروں کو معطل کر دیا ہے۔

سی سی پی او لاہور نے میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ مینار پاکستان واقعے میں 71 سالہ بزرگ کی گرفتاری میں غلطی ہوئی، جس نے گرفتار کیا اسے معطل کر دیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ چنگ چی رکشے والے واقعے میں کچھ لوگوں کو گرفتار کیا ہے جن سے تفتیش کی جا رہی ہے۔

میڈٰیا سے گفتگو میں بزرگ شہری حاجی وزیر خان کا کہنا تھا کہ میں گھر میں موجود تھا کہ اچانک پولیس والوں کی کال آئی کہ آپ کے زیر استعمال فون چوری کا ہے، ہمیں اس سلسلے میں ملاقات کرنا ہے۔

بزرگ شہری کا کہنا تھا کہ پولیس والے میرے گھر آئے اور اپنے ساتھ تھانے لے جا کر مجھے حوالات میں بند کر دیا۔

حاجی وزیر خان نے کہا کہ مینار پاکستان میں خاتون کیساتھ جو واقعہ پیش آیا اس وقت میں اپنے گھر میں موجود تھا۔ پولیس والوں کو ہماری عزت کا بھی خیال کرنا چاہیے تھا، بغیر تفتیش کئے مجھے حوالات میں بند کر دیا گیا۔