تازہ ترین
  • بریکنگ :- کوئٹہ اورلسبیلہ کےعلاوہ بلوچستان کے 32اضلاع میں بلدیاتی الیکشن
  • بریکنگ :- بلدیاتی انتخابات کےلیےبیلٹ پیپرزاورانتخابی میٹریل کی ترسیل کاعمل مکمل
  • بریکنگ :- پولنگ صبح 8بجےسےشام 5بجےتک بغیرکسی وقفےکےجاری رہےگی
  • بریکنگ :- کوئٹہ:7 میونسپل کارپوریشن،838یونین کونسلزمیں پولنگ ہوگی
  • بریکنگ :- کوئٹہ:5ہزار345دیہی وارڈاور9ہزار14شہری وارڈکےلیےپولنگ ہوگی
  • بریکنگ :- کوئٹہ:35لاکھ52ہزار298ووٹرز اپنا حق رائے دہی استعمال کریں گے
  • بریکنگ :- کوئٹہ:20لاکھ 6ہزار274مرداور15لاکھ46ہزار124خواتین ووٹرزہیں
  • بریکنگ :- کوئٹہ:32اضلاع میں 5ہزار226پولنگ اسٹیشنزقائم
  • بریکنگ :- کوئٹہ:2ہزار54پولنگ اسٹیشنزانتہائی حساس،ایک ہزار974حساس قرار
  • بریکنگ :- الیکشن میں16 ہزار195امیدوارمدمقابل،102 امیدواربلامقابلہ منتخب
  • بریکنگ :- کوئٹہ:پولنگ اسٹیشنزپرپولیس،لیویزاورایف سی کےجوان تعینات ہوں گے

غریب عوام کی ترقی چاہتے، آئندہ حکومت پیپلز پارٹی کی ہو گی: بلاول

Published On 01 September,2021 04:33 pm

گھوٹکی: (دنیا نیوز) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ ہم غریب عوام کی ترقی چاہتے ہیں، آئندہ حکومت پیپلز پارٹی کی ہو گی۔

سندھ کے ضلع گھوٹکی کے ڈگری کالج کے قریب تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین نے کہا کہ پیپلزپارٹی عوامی خدمت پریقین رکھتی ہے، پیپلزپارٹی نے ہمیشہ عوامی فلاح و بہبود کے لیے کام کیا، ہم نےغربت کیخلاف جدوجہد کرنی ہے۔ خواتین ترقی کریں گی تو پوراپاکستان ترقی کرے گا۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت میں لوگ بیروزگاری اور مہنگائی کیوجہ سے مشکل میں ہیں۔ احساس کہنےوالوں کو عوام کا احساس ہی نہیں ہے۔ آصف زرداری بی آئی ایس پی پروگرام لے کر آئے، بینظیرانکم سپورٹ پروگرام کامذاق اڑایا جاتا تھا۔ دنیا نے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کو سراہا ہے۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ آئندہ حکومت پیپلز پارٹی کی ہو گی، ہم غریب عوام کی ترقی چاہتے ہیں، عمران خان نے 50 لاکھ گھر بنانے کا وعدہ کر کے الٹاغریبوں کے گھر گرا دیئے گئے۔ موجودہ حکومت میں لوگ بےروزگاری اورمہنگائی کیوجہ سےمشکل میں ہیں، موجودہ حکومت میں عوام بے روزگاری اورمہنگائی کی وجہ سے مشکل میں ہے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نےکچھ نیانہیں کیا، صرف پیپلزپارٹی کی نقل کی ہے۔ ہماری حکومت آئےگی توانکم سپورٹ پروگرام بہتراندازمیں چلائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ عورتوں کواگرحقوق ملےہیں تووہ صرف اسلام نےدیئےہیں۔ کچھ لوگ اسلام کے نام پرعورتوں کے حقوق سلب کرنا چاہتے ہیں۔