تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزیراعلیٰ پنجاب سے ایاز صادق اورخواجہ سلمان رفیق کی ملاقات
  • بریکنگ :- سیاسی صورتحال اورمہنگائی کےخلاف اقدامات پرتبادلہ خیال
  • بریکنگ :- عمران خان کےدورمیں عوام مہنگائی سےبہت پریشان تھے،حمزہ شہباز
  • بریکنگ :- ہم نےآٹاسستاکرکےعوام کی مشکلات کم کیں ،حمزہ شہباز
  • بریکنگ :- 10کلوآٹےکاتھیلا 650 کےبجائے 490 روپے میں مل رہا ہے،حمزہ شہباز
  • بریکنگ :- چینی اورگھی سستاکرنےکیلئےاقدامات کررہے ہیں،حمزہ شہباز
  • بریکنگ :- عوام نے عمران خان کے انتشار مارچ کا دھڑن تختہ کردیا،حمزہ شہباز
  • بریکنگ :- آڈیولیک میں عمران خان این آراو کی بھیک مانگتا رہا،حمزہ شہباز

سپریم کورٹ: چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی تعیناتی کیخلاف اپیل مسترد

Published On 15 September,2021 10:07 am

اسلام آباد: (دنیا نیوز) سپریم کورٹ نے چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی تعیناتی کیخلاف اپیل مسترد کر دی۔ عدالت نے عظیم آفریدی کی درخواست پر رجسٹرار آفس کے اعتراضات بر قرار رکھے۔

 قائم مقام چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے خلاف کیس کی سماعت کی۔ قائم مقام چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے درخواست گزار وکیل علی عظیم سے کہا کہ جی آفریدی صاحب بتائیں الیکشن کمیشن میں حاضر سروس ججز کون ہیں ؟ آپ کہتے ہیں ریٹائرڈ بیوروکریٹ کو چیف الیکشن کمشنر نہیں لگایا جا سکتا، آپ نے کہا ہے چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی کیلئے چیف جسٹس سے مشاورت ہونی چاہیے۔

وکیل علی عظیم آفریدی نے دلائل دیتے ہوئے کہا الیکشن کمیشن میں کوئی سروینگ ججز بطور ممبر کام نہیں کر رہے ہیں۔ اس بات کے جواب میں جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا پھر تو بات ہی حتم ہو جاتی ہے، چیف الیکشن کمشنر اور چئیرمین نیب جوڈیشل افسران نہیں ہوتے، کیا آپ نے چئیرمین نیب تعیناتی کیس کا فیصلہ پڑھا ہے، درخواست میں آپ نے آئینی ترمیم کو بھی چیلنج کیا ہے، آپ کی کوشش کو سراہتے ہیں کہ آپ نے آئینی نقطہ اٹھایا ہے لیکن عدالت رجسٹرار آفس کے اعتراضات برقرار رکھے گی۔

عدالت نے رجسٹرار آفس کے اعتراضات برقرار رکھتے ہوئے علی آعظم آفریدی کی اپیل بمعہ آئینی درخواست خارج کر دی۔