اللہ نے موقع دیا تو معیشت کی بہتری ہماری اولین ترجیح ہوگی: نواز شریف

Published On 06 November,2023 04:54 pm

لاہور: (دنیا نیوز) پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد و سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ اگر اللہ نے موقع دیا تو معیشت کی بہتری ہماری اولین ترجیح ہو گی۔

قائد ن لیگ محمد نوازشریف سے سیالکوٹ سے سابق ایم پی ایز، ٹکٹ ہولڈرز نے ملاقات کی، پارٹی قائد نے 21 اکتوبر کو مینار پاکستان پر تاریخی استقبال پر سیالکوٹ کے رہنماؤں اور کارکنوں کی کارکردگی کو سراہا۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے کہا کہ ماضی کی تینوں حکومتوں میں معیشت ہمارے ایجنڈے کا بنیادی نکتہ رہا ہے، معیشت کی بہتری کی ہمیشہ بھرپور کوشش کی، معیشت کے موضوع میں صنعت، برآمدات اور مہنگائی سمیت سب کچھ ہی آجاتا ہے، معیشت کی بہتری مجموعی بہتری ہوتی ہے۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اللہ تعالیٰ نے پھر موقع دیا تو ہماری حکومت کی اولین ترجیح معیشت کی بہتری ہوگی، عوام کی خدمت سے بڑی خوشی کسی اور چیز سے نہیں ملتی، الحمدللہ تمام بڑے بڑے منصوبے ہمارے دور میں ہی لگے ہیں، 20،20 سال پرانے منصوبے بھی ہمارے ادوار میں مکمل ہوئے۔

قائدن لیگ نے کہا کہ 1975ء سے جاری لواری ٹنل کا منصوبہ50 ارب روپے سے ہم نے اپنے دور میں مکمل کیا، کھربوں روپے لگنے کے باوجود کھٹائی میں پڑے نیلم جہلم منصوبے کو ہم نے مکمل کرایا، سندھ میں کوئلے کا ذکر سالوں سے ہورہا تھا، پہلی مرتبہ اپنے کوئلے کی بنیاد پر منصوبہ ہم نے لگایا۔

یہ بھی پڑھیں: نواز شریف کی 4 سال بعد پارٹی آفس آمد، سیاسی ملاقاتیں شیڈول

ان کا کہنا تھا کہ سندھ میں مزید پلانٹ لگا کر درآمدی ایندھن سے نجات مل سکتی تھی، قرض میں کمی آسکتی تھی، اللہ تعالیٰ نے ہمیں بہت کچھ دے رکھا ہے، اسے استعمال کرنے کی ضرورت ہے، 1999ء سے شروع ہونے والی رفتار جاری رہتی تو آج ہم ایشیا میں سب سے آگے ہوتے۔

نوازشریف نے کہا کہ سیالکوٹ پاکستان کی برآمدات میں بہت اہم حصہ رکھتا ہے، برآمدات میں اضافے پر کام کرنا ہوگا، ہم نے چار سال ڈالر کو 104 روپے پر روکا اور ہلنے نہیں دیا، ہم نے تو آئی ایم ایف کو خداحافظ کہہ دیا تھا، آئی ایم ایف نے خود کہا کہ پاکستان بہت جلد پاؤں پر کھڑا ہو جائے گا اور اب پاکستان کو ہماری ضرورت نہیں ہوگی۔

 سابق وزیراعظم نے کہا کہ معاشی بحالی کے لئے استحکام لازم ہے، سب کو مل کر ملک کی ترقی کے لئے کام کرنا ہوگا، چیمبرز، صنعتکاروں سمیت تمام شعبوں کی مشاورت سے چلیں گے، کاروباری برادری کی مشاورت سے پالیسیاں بنا کر تسلسل یقینی بنائیں گے، نجی شعبے کا کردار بڑھائیں گے۔

ملاقات میں پارٹی صدر شہبازشریف، مریم نوازشریف، اسحاق ڈار، ایازصادق اور دیگر رہنما بھی موجود تھے۔

 

Advertisement