تازہ ترین
  • بریکنگ :- پاک آرمی کی چولستان کےدورافتادہ علاقوں میں مفت طبی سہولتیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- منصوبےکوعملی جامہ پہنانے کیلئے پاک آرمی کی خصوصی ٹیمیں تشکیل،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- ضلعی انتظامیہ کےساتھ طبی سہولتوں کی فراہمی کیلئےسرگرم ہیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- 2021 میں چنن پیر،کھتری بنگلہ،دین گڑھ میں میڈیکل اورآئی کیمپ کاانعقادکیاگیا
  • بریکنگ :- چاہ ناگراں،چاہ ملکانہ میں میڈیکل اورآئی کیمپ کا انعقادکیاجاچکاہے،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کالاپہاڑ،احمدپورایسٹ، منچن آباد اور چشتیاں میں فری میڈیکل اورآئی کیمپ کا انعقادکیاگیا
  • بریکنگ :- 12 ہزارافراد کوفری طبی سہولیات مہیا کی جا چکی ہیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- تحصیل اسپتال فورٹ عباس میں فری میڈیکل کیمپ 12سے 17 اکتوبرتک جاری ہے
  • بریکنگ :- 15 اکتوبر 2021کوکورکمانڈر بہاولپورنےآئی کیمپ کا دورہ کیا،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کورکمانڈربہاولپورنےکیمپوں میں دی گئی سہولتوں کاجائزہ لیا،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کورکمانڈرنےہدایت کی کہ زیادہ ترمریضوں کوطبی سہولتیں دی جائیں،آئی ایس پی آر

لداخ میں چین سے بات چیت ہوسکتی ہے تو پاکستان سے کیوں نہیں: فاروق عبد اللہ

Published On 22 February,2021 05:44 pm

سرینگر: (ویب ڈیسک) مقبوضہ کشمیر کے سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ فاروق عبد اللہ بھی پاکستان سے بات چیت کے متمنی نکلے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ نے کہا کہ بی جے پی کو واجپائی کی "دوست بدل سکتے ہیں ہمسایہ نہیں"والی پالیسی پر عمل کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ جس طرح لداخ سے فوج کو ہٹایا گیا مقبوضہ کشمیر سے بھی فوج ہٹانے کی ضرورت ہے۔ لداخ میں چین سے بات چیت ہوسکتی ہے تو پاکستان سے کیوں نہیں۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے فاروق عبد اللہ کا کہنا تھا کہ نہ ہم نے 5 اگست 2019 والا فیصلہ قبول نہیں کیانہ حد بندی کمیشن قبول کریں گے۔ روایتی لباس فیرن کشمیریوں کی شناخت ہے اس پر پابندی کا مطالبہ افسوسناک ہے۔