تازہ ترین
  • بریکنگ :- لندن:گورنرپنجاب محمدسرورکےاعزازمیں استقبالیہ
  • بریکنگ :- پارٹی کی طرف سےعہدہ چھوڑنےکاکہاجاناجھوٹ ہے،گورنرپنجاب
  • بریکنگ :- لندن:سائیڈلائن کیےجانےکاتاثربھی درست نہیں،چودھری محمدسرور
  • بریکنگ :- پارٹی ڈسپلن کاپابندہوں،پارٹی کہےگی توعہدہ چھوڑدوں گا،چودھری سرور

پاکستان میں کورونا ویکسین سے متعلق جعلی معلومات پھیلائی جانے لگیں

Published On 10 August,2021 04:27 pm

لاہور: (ویب ڈیسک) ملک بھر میں مختلف کورنا ویکسین سے متعلق جعلی معلومات پھیلائی جانے لگیں۔ این سی او سی نے عوام کو خبردار کر دیا۔

این سی او سی کی سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک سکرین شارٹ شیئر کیا گیا۔ اس سکرین شارٹ پر حکومت پاکستان کا لوگو لگا ہوا ہے۔سکرین شارٹ پر غلط انفارمیشن لکھا ہوا ہے۔

سکرین شارٹ پر دیکھا جا سکتا ہے کہ جس میں لکھا گیا ہے کہ مندرجہ ذیل افراد کو سائنو فارم ویکسین نہیں لگانا چاہیے۔

ایسے افراد افراد جن کی عمر 60 سال یا اس سے زیادہ ہو۔

وہ افراد جنہیں بخار ہو، (بخار ہونے کے بعد وہ افراد ویکسین لگوا سکتے ہیں۔

وہ افراد جو آئسولیشن کی مدت میں ہوں ، آئسولیشن کی مدت پوری ہونے کے بعد وہ افراد ویکسین لگوا سکتے ہیں۔

وہ افراد جو قلیل مدتی مدافعتی دوائیں استعمال کر رہے ہوں وہ دوا ختم ہونے کے 28 دنوں بعد ویکسین لگوا سکتے ہیں۔

وہ افراد جنہوں نے کوئی پیوند کاری کروائی ہو( وہ پیوند کاری کے تین ماہ بعد ویکسین لگوا سکتے ہیں)

وہ افراد جنہوں نے کیمرتھراپی کروائی ہو۔ (وہ کیمر تھراپی کے 28 دنوں کے بعد ویکسین لگوا سکتے ہیں)

حاملہ خواتین یہ ویکسین نہیں لگوا سکتیں۔

دودھ پلانے والی مائیں یہ ویکسین نہیں لگوا سکتیں۔

دل کے امراض اور سانس کی بیماری میں مبتلا افراد ویکسین نہیں لگوا سکتے۔