تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزیراعظم شہبازشریف کی زیرصدارت اتحادیوں کااجلاس
  • بریکنگ :- فوری الیکشن کی تاریخ دینےکاعمران خان کامطالبہ مسترد،ذرائع
  • بریکنگ :- حکومت 2023 تک اپنی مدت پورےکرےگی،تمام جماعتوں کامتفقہ فیصلہ
  • بریکنگ :- تمام اتحادی جماعتوں نےوزیراعظم کےفیصلےکی توثیق کردی،ذرائع
  • بریکنگ :- اتحادیوں کاالیکشن سےقبل اصلاحات کاعمل جلدمکمل کرنےپرزور،ذرائع
  • بریکنگ :- وزیراعظم،اتحادیوں کامعیشت کی بحالی کیلئےفوری اقدامات کرنےکافیصلہ،ذرائع
  • بریکنگ :- اتحادیوں کی سیاسی بحران،معاشی استحکام کیلئےمکمل تعاون کی یقین دہانی
  • بریکنگ :- وزیراعظم نےروپےکی قدرمیں اضافےودیگرمعاشی امورپراعتمادمیں لیا
  • بریکنگ :- شرکانےعمران خان کی 4سالہ کارکردگی کی حقیقت عوام کےسامنےلانےپرزوردیا،ذرائع

کابل سے انخلاء:افغان مترجموں پر کتوں کو ترجیح، برطانوی پارلیمنٹ نے بھانڈہ پھوڑ دیا

Published On 07 December,2021 06:55 pm

لندن:(دنیا نیوز) برطانوی پارلیمنٹ کی کمیٹی برائے خارجہ امور نے بھانڈہ پھوڑتے ہوئے کہا کہ برطانوی حکومت نے کابل سے انخلاء کے دوران افغان مترجموں کو چھوڑ کر ڈیڑھ سو کتوں کو ریسکیو کیا ۔

برطانوی پارلیمنٹ کی کمیٹی برائے خارجہ امور نے بھانڈہ پھوڑ دیا۔ بورس جانسن نے الزامات کو غیر منطقی قرار دے دیا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق کابل سے غیر ملکیوں کا انخلاء حالیہ تاریخ کا سیاہ ترین باب ہے ، برطانوی حکومت پر انخلاء کے دوران کتوں کو انسانوں پر ترجیح دینے کا الزام عائد کیا گیا ہے جبکہ برطانوی پارلیمنٹ کی کمیٹی برائے خارجہ امور نے حکومت کو بے نقاب کردیا۔

کمیٹی کی رپورٹ کے مطابق برطانوی مشن کے ساتھ مترجم کے طور پر کام کرنے والے افغان شہریوں نے بڑی تعداد میں کابل سے انخلاء کی درخواست دی، لیکن صرف پانچ فیصدافرادکی درخواستوں پر غور کیا گیا جبکہ بورس جانسن کے حکم پر 150کتوں کو ایک ایسے وقت میں کابل سے طیاروں کے ذریعے نکالاگیا جب افغان مترجم شدید خطرے سے دوچار تھے۔

دوسری جانب بورس جانسن نے الزامات کو غیر منطقی قرار دے کر مسترد کرتے ہوئے ایسے کسی بھی احکامات سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ کابل سے انخلاء گزشتہ نصف صدی کا کامیاب ترین آپریشن تھا۔