تازہ ترین
  • بریکنگ :- کابینہ اجلاس میں 13 نکاتی ایجنڈےپرغورکیاجائےگا،ذرائع
  • بریکنگ :- وفاقی کابینہ کومعاشی اشاریوں سےمتعلق بریفنگ دی جائےگی
  • بریکنگ :- وزارتوں،ڈویژنزمیں سی ای اوزاورایم ڈیزکی خالی اسامیوں سےمتعلق بریفنگ دی جائےگی
  • بریکنگ :- کابینہ نیشنل ایوی ایشن پالیسی 2019 کےقانون میں ترمیم کی منظوری دےگی
  • بریکنگ :- کابینہ ای اوبی آئی کےچیئرمین کی کنٹریکٹ پرتعیناتی کی منظوری دےگی
  • بریکنگ :- کابینہ ذیلی کمیٹی برائےادارہ جاتی اصلاحات کےفیصلوں کی توثیق کرےگی
  • بریکنگ :- وفاقی کابینہ ذیلی کمیٹی برائےتوانائی کےفیصلوں کی بھی توثیق کرےگی
  • بریکنگ :- وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کااجلاس کل ہوگا
  • بریکنگ :- ملکی سیاسی،معاشی اورسیکیورٹی صورتحال کاجائزہ لیاجائےگا

نئے بجٹ میں کسی ٹیکس چور کو نہیں چھوڑوں گا: وفاقی وزیر خزانہ

Published On 23 June,2021 07:38 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ اب ایف بی آر کے نوٹسز نظرانداز کرنے والوں نقصان ہوگا، نئے بجٹ میں کسی ٹیکس چور کو نہیں چھوڑوں گا۔

دنیا نیوز سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے وفاقی وزیر خزانہ نے کہا کہ بجٹ میں 383 ارب روپے کی بجائے 264 ارب روپے کے اقدامات ہو سکتے ہیں، سینیٹ کی خزانہ کمیٹی کے ذریعے مختلف شعبوں کو ریلیف دیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ بجٹ کی مشاورت میں سینیٹ کی تجاویز شامل کی گئی ہیں، یکم جولائی سے ٹیکس اقدامات پر عملدرآمد شروع ہو جائے گا، نئے بجٹ میں کسی ٹیکس چور کو نہیں چھوڑوں گا، ٹیکس معاملات پر تمام فریقین سے بیٹھ کر بات کرنے کیلئے تیار ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ تمام فریقین سے بات کرنے کے بعد پالیسی انفورسمنٹ اقدامات ہوں گے، ماضی میں ٹیکس چور ٹیکس نوٹس نظرانداز کرلیتے تھے، اب ایف بی آر کے نوٹسز نظرانداز کرنے والوں نقصان ہوگا۔

وفاقی وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ ٹیکس افسر کسی کو ٹیکس گزار ہراساں نہیں کرسکے گا، نئے بجٹ میں ٹیکس چور کے لیے کوئی رعایت نہیں۔