تازہ ترین
  • بریکنگ :- برآمدات 27.8 فیصداضافےسے 26.9 ارب ڈالرکی سطح تک پہنچ گئیں
  • بریکنگ :- درآمدات 39 فیصداضافےسے 59.8 ارب ڈالرکی سطح تک پہنچ گئیں
  • بریکنگ :- کرنٹ اکاؤنٹ خسارےمیں 13.8 ارب ڈالرکااضافہ ریکارڈ
  • بریکنگ :- براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری 1.6 فیصدکمی سے 1.45 ارب ڈالررہی
  • بریکنگ :- زرمبادلہ ذخائرمئی کےتیسرےہفتے تک 16.108 ارب ڈالررہے،رپورٹ
  • بریکنگ :- اسٹیٹ بینک 10 ارب 2 کروڑڈالر،کمرشل بینکوں کےذخائر 6.08 ارب ڈالررہے،رپورٹ
  • بریکنگ :- ڈالرکی شرح تبادلہ 201.92 روپےفی ڈالرکی سطح پرپہنچ گئی،رپورٹ
  • بریکنگ :- 9ماہ میں ٹیکس ریونیو 28.5 فیصداضافےسے 4855 ارب روپےرہا،رپورٹ
  • بریکنگ :- جولائی تامارچ نان ٹیکس آمدنی 15.7 فیصدکمی سے 983 ارب رہی،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- جولائی تااپریل پی ایس ڈی پی کی مدمیں 603 ارب روپےمنظورکیےگئے
  • بریکنگ :- جولائی تامارچ مالیاتی خسارہ بڑھ کر 2566 ارب کی سطح تک پہنچ گیا، رپورٹ
  • بریکنگ :- اپریل میں مہنگائی کی شرح 13.4 فیصدریکارڈ ،رپورٹ
  • بریکنگ :- پہلے 10 ماہ میں مہنگائی کی شرح 11 فیصدریکارڈکی گئی،رپورٹ
  • بریکنگ :- وزارت خزانہ کی ملکی معیشت پرماہانہ آؤٹ لک رپورٹ جاری
  • بریکنگ :- پہلے 10 ماہ ترسیلات زر 7.6 فیصداضافےسے 26.1 ارب ڈالرریکارڈ

'ڈالر میں اضافہ عمران حکومت کے آئی ایم ایف سے معاہدے کی خلاف ورزی کا نتیجہ'

Published On 13 May,2022 05:30 pm

کراچی:(دنیا نیوز) وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ ڈالر اور مہنگائی میں اضافہ عمران حکومت کے آئی ایم ایف سے معاہدے کی خلاف ورزی کا نتیجہ ہے۔

اسٹاک مارکیٹ کی مندی، روپے کی گرتی قدر اور غیر یقینی کی صورتحال پر وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کا کہنا ہے کہ عمران خان نے جو معاہدے کیے ان کے چنگل سے نکلیں گے تو ڈالر نیچے آئے گا اور اسٹاک مارکیٹ اوپر جائیگی۔

وزیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان معیشت کو جس نہج پر چھوڑ کر گئے ہیں، اسے واپس لانا آسان کام نہیں، پٹرول پر سبسڈی نے پاکستان کی معاشی صورتحال کو شدید مالی دباؤ سے دوچار کیا، اتنا بڑا خسارہ کوئی بھی حکومت برداشت نہیں کرسکتی۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت کے پاس پیسے نہ ہوں اور پھر بھی سبسڈی دے تو مزید قرض لینا پڑتا ہے، اسی وجہ سے شرح سود میں اضافے کے ساتھ روپے پر دباؤ بڑھ رہا ہے، عمران خان نے تاریخ کا سب سے بڑا قرض بھی لیا۔