تازہ ترین
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 13لاکھ 67 ہزار 605 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک میں کوروناکےایکٹوکیسزکی تعداد 70 ہزار 263 ہوگئی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹےکےدوران کوروناسےمزید 20 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 29 ہزار 97 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکے 647 مریض صحت یاب،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےصحت یاب افرادکی مجموعی تعداد 12 لاکھ 68 ہزار 245 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 58 ہزار 334 کوروناٹیسٹ کیےگئے
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 2 کروڑ 45 لاکھ 32 ہزار 952 کوروناٹیسٹ کیےجاچکے
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 1083 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
  • بریکنگ :- پنجاب 4 لاکھ 62 ہزار 323،سندھ میں 5 لاکھ 23 ہزار 774 کیسز
  • بریکنگ :- خیبرپختونخواایک لاکھ 84 ہزار 455،بلوچستان میں 33 ہزار 910 کیس رپورٹ
  • بریکنگ :- اسلام آبادایک لاکھ 17 ہزار 436،گلگت بلتستان میں 10 ہزار 489 کیسز
  • بریکنگ :- آزادکشمیرمیں کورونامریضوں کی تعداد 35 ہزار 218 ہوگئی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 13 فیصدرہی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکےمزید 7586 کیس رپورٹ،این سی اوسی

پاکستان ایران سعودی عرب معاملات کو سلجھائے: ڈونلڈ ٹرمپ

Last Updated On 23 September,2019 11:46 pm

نیو یارک: (ویب ڈیسک) ایران کے معاملے پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستان سے ساتھ مدد مانگتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام آباد ایران، سعودی عرب معاملات کو سلجھائے اور بڑھتی ہوئی کشیدگی کم کرے۔

نیو یارک میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ عمران خان کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کیساتھ تین پوائنٹ پر بات ہوئی، پہلا پوائنٹ مسئلہ کشمیر تھا، دوسرا پوائنٹ افغانستان جبکہ تیسرا پوائنٹ ایران تھا جس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستان کو کہا کہ ایران سعودی عرب معاملات کو سلجھائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ایران کی صورتحال پر وزیراعظم کی پالیسی واضح ہے، عمران خان کا کہنا تھا کہ ایران پر بغیر کسی سوچے جنگ شروع کی جاتی ہے تو وہاں (تہران) میں حالات خراب ہو جائیں گے، ہم پہلے ہی مغربی سرحد کی طرف مصروف ہیں، ہم ہر گز نہیں چاہیں گے کہ ایران کے بارڈر کے حالات خراب ہوں۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ پاکستان ایران سعودی معاملات کو سلجھائے۔

شاہ محمود کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے ایران کے معاملے پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو ثالثی کا کہا، جس پر آمادگی ظاہر کی، ایرانی صدر حسن روحانی اور عمران خان کی ملاقات جلد ہونی ہے، ہم ایرانی صدر اور وزیر خارجہ جواد ظریف کے ساتھ بات کریں گے اور مسئلے پر ثالثی کریں گے اور دیکھیں گے کہ مسئلہ کیسے حل ہو سکتا ہے۔

دوسرا پوائنٹ کے بارے میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر پر وزیراعظم عمران خان نے کھل کر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سامنے اپنا مؤقف رکھا، وزیراعظم نے ٹرمپ کو کہا کہ 80 لاکھ لوگ نظر بند ہیں، وادی کی صورتحال خراب ہے۔ عمران خان نے کہا کہ اگر بھارت کسی کی سنے گا تو وہ امریکا ہے، اس لیے ٹرمپ اپنا کردار ادا کریں کیونکہ امریکا کا دنیا سمیت بھارت پر اثر و رسوخ ہے۔

تیسرے پوائنٹ کے حوالے سے شاہ محمود کا کہنا تھا کہ افغانستان کا ایشو تیسرا پوائنٹ تھا، وزیراعظم نے کہا کہ افغانستان کا کوئی ملٹری حل نہیں ہے، مسئلے کا حل مذاکرات کے ذریعے ہی حل ہو سکتا ہے۔ تعطل ہونا چاہیے۔ افغانستان میں ہم مستقبل کے قریب میں پیشرفت دیکھنا چاہتے ہیں۔