تازہ ترین
  • بریکنگ :- افسران واٹس ایپ پرچلتے رہے،تحقیقات میں انکشاف
  • بریکنگ :- افسران صورتحال کو سمجھ نہیں سکے ،رپورٹ
  • بریکنگ :- افسران نےصورتحال کوسنجیدہ لیانہ کسی پلان پرعمل کیا ،رپورٹ
  • بریکنگ :- متعددافسران نے واٹس ایپ میسج تاخیر سے دیکھے ،رپورٹ
  • بریکنگ :- کمشنر، ڈی سی ،اے سی نےغفلت کا مظاہرہ کیا،رپورٹ
  • بریکنگ :- سی پی او،سی ٹی اوذمہ داریاں پوری کرنےمیں ناکام رہے،رپورٹ
  • بریکنگ :- محکمہ جنگلات اور ریسکیو 1122کا مقامی آفس بھی کچھ نہ کرسکا
  • بریکنگ :- محکمہ ہائی وے بھی ذمہ داری پوری کرنے میں ناکام رہا،رپورٹ
  • بریکنگ :- سانحہ مری کی رپورٹ 27 صفحات پر مشتمل ہے
  • بریکنگ :- 4 والیم پرمشتمل افسران اورمقامی لوگوں کے بیانات لیے گئے
  • بریکنگ :- تحقیقاتی کمیٹی کی مری میں محکمہ موسمیات کادفترقائم کرنےکی سفارش
  • بریکنگ :- مری کا ہل اسٹیشن تجاوزات کی وجہ سے گلیوں میں تبدیل ہوگیا،رپورٹ
  • بریکنگ :- غیر قانونی عمارتیں گرانےکی سفارش کی گئی ہے،رپورٹ
  • بریکنگ :- مشینری موجود تھی لیکن آدھا عملہ غائب تھا، رپورٹ
  • بریکنگ :- سانحہ مری ،متعلقہ محکموں کی غفلت ثابت

عوام مزید مہنگائی برداشت نہیں کر سکتے،حکومت اوگرا کی سمری مسترد کرے: شیری رحمان

Last Updated On 30 December,2019 05:39 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) نائب صدر پیپلز پارٹی سینیٹر شیری رحمان نے پیٹرولیم مصنوعات میں ممکنہ اضافے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ نئے سال میں عوام کو ریلیف نہیں دے سکتے تو مہنگائی تو مت کریں۔

شیری رحمان نے اپنے بیان میں کہا کہ اوگرا کی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری کو مسترد کرتے ہیں۔ حکومت کس بنیاد پر قیمتوں میں اضافہ کر رہی ہے؟

ان کا کہنا تھا کہ حکومت پہلے ہی عالمی منڈی کے مقابلے میں مہنگا تیل بیچ رہی ہے۔ مہنگائی سرکار پورا سال عوام کا خون چوستی رہی، ڈیڑھ سال میں یہ حکومت پیٹرول کی قیمتوں میں 27 روپے کا اضافہ کر چکی ہے۔

شیری رحمان کا کہنا تھا کہ عوام سے مزید مہنگائی برداشت نہیں ہو سکتی، حکومت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کیلئے اوگرا کی سمری کو مسترد کرے۔