تازہ ترین
  • بریکنگ :- پی ٹی آئی کی درخواست پراسلام آبادہائیکورٹ میں سماعت
  • بریکنگ :- پرامن احتجاج ہرپاکستانی کابنیادی آئینی حق ہے،وکیل پی ٹی آئی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں پی ٹی آئی رہنماؤں کوگرفتارکیاجارہاہے،وکیل
  • بریکنگ :- احتجاج پرسپریم کورٹ کادھرناکیس کافیصلہ موجودہے،چیف جسٹس
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ کےوضع کردہ اصولوں کےمطابق احتجاج آئینی حق ہے،چیف جسٹس
  • بریکنگ :- عدالت محض خدشےکےپیش نظرحکم جاری نہیں کرسکتی،چیف جسٹس
  • بریکنگ :- اسلام آبادمیں بےلگام احتجاج کی اجازت نہیں دی جاسکتی،عدالت
  • بریکنگ :- اسلام آبادمیں حساس دفاتراوراہم سفارتخانےہیں،چیف جسٹس اطہرمن اللہ
  • بریکنگ :- احتجاج کی آڑمیں شرپسندآجائیں توکیسےنمٹیں گے؟چیف جسٹس اطہرمن اللہ
  • بریکنگ :- پی ٹی آئی احتجاج کیلئےضلعی انتظامیہ کودرخواست دے،عدالت
  • بریکنگ :- اسلام آباد:پتہ نہیں پولیس کوکون ہدایات دیتاہے،عدالت
  • بریکنگ :- پولیس نےپارلیمنٹ لاجزسےارکان اسمبلی کوپکڑا،چیف جسٹس ہائیکورٹ
  • بریکنگ :- پی ٹی آئی بیان حلفی دےسکتی ہےکہ قانون نہیں توڑاجائےگا؟عدالت
  • بریکنگ :- اسلام آباد:عدالت نےسماعت میں کچھ دیرکاوقفہ کردیا
  • بریکنگ :- عدالتی فیصلوں کاجائزہ لےکرعدالت کی معاونت کردیتاہوں،بیرسٹرعلی ظفر
  • بریکنگ :- عدالت نےبیرسٹرعلی ظفرکوعدالتی فیصلوں کاجائزہ لینےکیلئےوقت دےدیا

ایف آئی اے کے تمام الزامات بے بنیاد اور جھوٹ پر مبنی ہیں، جہانگیر ترین

Published On 17 September,2020 06:57 pm

لندن: (دنیا نیوز) جہانگیر ترین نے کہا ہے کہ ایف آئی اے کی جانب سے عائد کئے گئے تمام الزامات بے بنیاد اور جھوٹ پر مبنی ہیں، میرے متعلق کہانی گھڑ کے ایک خود ساختہ کیس بنایا گیا، اس کیس کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کی جانب سے طلبی کا جواب دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ انکوائری کمیش کا مقصد چینی کی قیمت میں اضافے کی وجہ معلوم کرنا تھا جبکہ اس کے بر عکس بے سرو پا الزامات لگا کر مجھے ایف آئی اے طلب کیا جا رہا ہے۔

جہانگیر ترین نے کہا کہ ان الزامات کا چینی کی قیمت سے کوئی تعلق ہی نہیں جن کارپوریٹ ٹرانزایکشنز کے الزامات عائد کئے جا رہے ہیں وہ آج سے کئی سال پرانے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سالوں پہلے کی گئی ٹرانزیکشنز کا چینی کی قیمت میں حالیہ اضافے سے کیا تعلق ہے؟ علی ترین کا جے ڈی ڈبلیو انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں، وہ موجودہ بورڈ کا ممبر ہے اور نہ ہی کبھی ماضی میں کسی عہدے پر فائز رہا۔ کیس سے متعلق میرا مکمل موقف اور تفصیلات جلد ایف آئی اے کو جمع کرا دی جائیں گی۔

خیال رہے کہ ایف آئی اے نے منی لانڈرنگ اور شوگر ملز فراڈ سے متعلق تحقیقات میں علی خان ترین کو 18 ستمبر جبکہ ان کے والد جہانگیر خان ترین کو 19 ستمبر کو لاہور دفتر میں پیش ہونے کی ہدایت کی ہے۔

دونوں سے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم منی لانڈرنگ، شوگر ملز فراڈ سے متعلق تحقیقات کرے گی۔