تازہ ترین
  • بریکنگ :- لاہورہائیکورٹ نےتحریری فیصلہ جاری کردیا
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب یکم جولائی شام 4 بجےاجلاس بلائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- اجلاس میں دوبارہ گنتی ہوگی،لاہورہائیکورٹ کافیصلہ
  • بریکنگ :- تمام ادارےعدالتی احکامات کی پاسداری کرائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- وزیراعلیٰ کےانتخاب کاعمل مکمل کیےبغیراجلاس ملتوی نہیں ہوگا،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرآرٹیکل 130 کی شق 5 کےتحت اپنےفرائض سرانجام دیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب نومنتخب وزیراعلیٰ سےحلف لیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرانتخابی عمل سےاگلےروز 11 بجےتک حلف لینےکےپابندہوں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب الیکشن کنڈکٹ سےمتعلق اپنی رائےنہیں دیں گے،فیصلہ

منی لانڈرنگ ریفرنس: شہباز خاندان کے اثاثے منجمد کرنے کی عملدرآمد رپورٹ طلب

Published On 19 December,2020 11:41 am

لاہور: (دنیا نیوز) منی لانڈرنگ ریفرنس میں نئی پیشرفت، عدالت نے شہباز خاندان کے اثاثے منجمد کرنے کی عملدرآمد رپورٹ طلب کرلی۔ 22 دسمبر کو نیب گواہ کے بیان پر دوبارہ جرح ہوگی۔

 احتساب عدالت کے ایڈمن جج جواد الحسن نے گزشتہ سماعت کا دو صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کر دیا۔ تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ڈی جی نیب لاہور ریفرنس میں اشتہاری نصرت شہباز، سلمان شہباز، رابعہ عمران، اور ہارون یوسف سمیت دیگر اشتہاریوں کے اثاثے منجمد کرنے کی عمل درآمد رپورٹ آئندہ سماعت پر جمع کرائیں۔

عدالت نے شہباز شریف خاندان کے خلاف نیب کے گواہ کو آئندہ سماعت پر جرح کے لیے دوبارہ طلب کر لیا۔ تحریری فیصلے کے مطابق شہباز شریف کے وکلاء نے مصروفیت کے باعث نیب کے گواہ پر جرح نہیں کی۔ نیب کی جانب سے دائر ریفرنس میں 16 ملزمان کو نامزد کیا گیا ہے جن میں سے 6 ملزمان کو عدالت عدم حاضری کے باعث اشتہاری قرار دے چکی ہے۔