تازہ ترین
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 12 لاکھ 21 ہزار 261 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک میں کوروناکےایکٹوکیسزکی تعداد 64 ہزار 564 ہے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹے کےدوران کوروناسےمزید 63 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 27 ہزار 135 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 57 ہزار 77 کوروناٹیسٹ کیےگئے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کورونا کے مزید 2512 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 4.4 فیصدرہی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکے 3 ہزار 610 مریض صحت یاب،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےصحت یاب افرادکی مجموعی تعداد 11 لاکھ 29 ہزار 562 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں ایک کروڑ 87 لاکھ 97 ہزار 433 کوروناٹیسٹ کیےجاچکے
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 5117 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
  • بریکنگ :- پنجاب 4 لاکھ 20 ہزار 615 ،سندھ میں 4 لاکھ 49 ہزار 349 کیسز،این سی اوسی
  • بریکنگ :- خیبرپختونخواایک لاکھ 70 ہزار 738،بلوچستان میں 32 ہزار 722 کیس رپورٹ
  • بریکنگ :- اسلام آباد ایک لاکھ 3 ہزار 923 ،گلگت بلتستان میں 10 ہزار 232 کیسز
  • بریکنگ :- آزادکشمیرمیں کورونامریضوں کی تعداد 33 ہزار 682 ہوگئی،این سی اوسی

سعید غنی بھی این اے 249 میں دوبارہ الیکشن کے حامی، پارٹی کو تجویز دیدی

Published On 01 May,2021 09:35 pm

لاہور: (دنیا نیوز) این اے 249 میں الیکشن جیتنے والی پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی نے مسلم لیگ ن کی طرف سے دھاندلی کے الزامات کے بعد حلقے میں دوبارہ انتخابات کی تجویز پارٹی کو دیدی۔

دنیا نیوز کے پروگرام ’اختلافی نوٹ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی کا کہنا تھا کہ 2013میں این اے249 سے الیکشن جیت چکا ہوں، پیپلزپارٹی کا حلقے میں نام موجود تھا، شاہدخاقان عباسی کوغیرذمہ دارانہ بیان نہیں دینا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ پارٹی کوتجویزدی ہے کہ ری پول کی طرف جانا چاہیے، سوفیصد یقین ہے کہ ہم ری پول میں زیادہ مارجن سے جیتیں گے۔ پیپلزپارٹی واحد جماعت جس کے سوفیصد ورکرزپولنگ ایجنٹ اپنے تھے، پی ٹی آئی،(ن)لیگ کے اپنے پولنگ ایجنٹ نہیں تھے۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ پیپلزپارٹی کوموردالزام ٹہرانا مناسب بات نہیں، کسی ایک جماعت نے بھی حلقے میں شکایت نہیں کی،پی پی کراچی کا صدرہوں پورے الیکشن کومانیٹرکیا ہے، ہم نے(ن)لیگ،پی ٹی آئی،ایم کیوایم کے لوگوں سے ووٹ کے لیے رابطے کیے، ہم نے این اے249حلقے میں محنت کی جس کے باعث جیت ہمارا مقدمہ بنی۔