تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزیراعظم نے اعلیٰ افسران کی ترقیوں کی منظوری دے دی
  • بریکنگ :- وزیراعظم نےسینٹرل سلیکشن بورڈکی سفارشات پرترقیوں کی منظوری دی
  • بریکنگ :- سیکرٹریٹ گروپ گریڈ 20 کے 5 افسران کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- وزارت خزانہ میں جوائنٹ سیکرٹری طاہر نور کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- طاہر نوروزارت خزانہ میں سینئر جوائنٹ سیکرٹری تعینات
  • بریکنگ :- اسٹیبلشمنٹ ڈویژن میں جوائنٹ سیکرٹری شعیب اکبرکی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- وزیراعظم آفس میں تعینات علی اصغر کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- ڈی جی ایف پی ایس سی صبینہ قریشی کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- گریڈ 20 کےحسن رضا سعیدکی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- پاکستان ایڈمنسٹریٹوسروس کے 7افسران کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- چیف کمشنر اسلام آباد عامر علی احمد کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- عامر علی احمد چیف کمشنر اسلام آباد کےعہدے پر کام جاری رکھیں گے
  • بریکنگ :- گریڈ 20 کےعلی طاہر کی گریڈ21 میں ترقی
  • بریکنگ :- کیپٹن (ر)اسداللہ خان کی گریڈ21 میں ترقی
  • بریکنگ :- گریڈ 20 کے محمد حسن اقبال اورفوادہاشم ربانی کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- زاہد علی عباسی اور افتخار علی ساہو کی گریڈ 21 میں ترقی
  • بریکنگ :- اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے ترقیوں کانوٹیفکیشن جاری کردیا

محکمہ صحت سندھ افسران کے کورونا ویکسین کی فروخت میں ملوث ہونے کا انکشاف، گرفتاری کا امکان

Published On 29 July,2021 03:25 pm

کراچی: (دنیا نیوز) محکمہ صحت سندھ افسران کے کورونا ویکسین کی فروخت میں ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے، تحقیقات کی روشنی میں پولیس نے محکمہ صحت کے افسران کی گرفتاری کے لیے اجازت طلب کرلی، پولیس کا کہنا محکمہ صحت کے مزید افسران کی گرفتاری عمل میں آسکتی ہے۔

کراچی میں کورونا ویکسین کی فروخت کے حوالے سے گرفتار ملزمان سے پولیس کی تحقیقات جاری ہیں، ویکسین کی فروخت میں ملوث دیگر گرفتار 3 ملزمان کے انکشافات سامنے آگئے۔

پولیس تفتیش کے مطابق گرفتار ملزم ذیشان ڈی ایچ او ہیلتھ آفس میں کنٹریکٹ پر میل نرس بھرتی ہوا، ہیلتھ ڈپارٹمنٹ کے افسر صمد سمیت دیگر نے ویکسین فروخت کرنے کا کہا، دفتر کے ساتھی سلطان کی مدد سے ہیلتھ کیئر سروس کے ساتھ گھر گھر جاکر فائزر ویکسین لگانا شروع کی۔

ملزم نے انکشاف کیا ہے کہ سائنو فارم، سائنو ویک، فائزر ویکسین 7500 سے 15ہزارروپے میں بیچی، ویکسین لگوانے والوں کی انٹری بیرون ملک جانے والوں کی فہرست میں شامل کی جاتی تھی۔

ملزمان کے مطابق ویکسین فروخت کرنے کے بعد پیسے ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے افسران کو دیتے تھے، پولیس کا کہنا ہے ملزمان کے انکشافات کی روشنی میں محکمہ صحت کے مزید افسران کی گرفتاری عمل میں آسکتی ہے۔