تازہ ترین
  • بریکنگ :- الیکشن کمیشن نے 150 ارکان پارلیمنٹ کی رکنیت معطل کردی
  • بریکنگ :- اسلام آباد: رکنیت گوشوارے جمع نہ کرانے پر معطل کی گئی
  • بریکنگ :- قومی اسمبلی 36،سینیٹ 3،پنجاب اسمبلی کے 69 ارکان کی رکنیت معطل
  • بریکنگ :- سندھ اسمبلی 14،خیبرپختونخوا اسمبلی کے 21 ارکان کی رکنیت معطل
  • بریکنگ :- بلوچستان اسمبلی کے 7 ارکان کی رکنیت بھی معطل کردی گئی
  • بریکنگ :- نورالحق قادری،فرخ حبیب،حماداظہر،شفقت محمودکی رکنیت معطل
  • بریکنگ :- فہمیدہ مرزا،عامرلیاقت،راجہ ریاض،صداقت عباسی،خالدمقبول صدیقی شامل
  • بریکنگ :- رکن پنجاب اسمبلی اویس لغاری کی رکنیت معطل
  • بریکنگ :- الیکشن کمیشن نےیارمحمدرندکی رکنیت معطل کردی
  • بریکنگ :- معطل ارکان اسمبلی وسینیٹ اجلاسوں میں شرکت نہیں کرسکیں گے،الیکشن کمیشن
  • بریکنگ :- معطل ارکان کسی بھی قانون سازی میں شریک نہیں ہوں گے،الیکشن کمیشن

طالبان امریکا کیساتھ امن میں شراکت دار بن سکتے ہیں: وزیراعظم عمران خان

Published On 24 September,2021 03:17 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وزیراعظم نے کہا ہے کہ کابل میں دہشتگردی کے خاتمے کیلئے حکام سے مل کر کام کرنا ہوگا، طالبان امریکا کیساتھ امن میں شراکت دار بن سکتے ہیں۔

 وزیراعظم عمران خان نے امریکی ہفتہ روزہ میگزین نیوز ویک کو انٹریو دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں عبوری دور مشکل ہے لیکن طالبان کے مکمل کنٹرول سے امن کی امید ہے، افغانستان میں ٹی ٹی پی اور دوسرے دہشتگرد گروپس کو غیر موثر کرنے کے لیے افغان حکومت کے ساتھ کام کرنا ہوگا، امریکا اور خطے کی طاقتوں کے درمیان تعاون ہی تباہی سے بچنے کا واحد راستہ ہے۔

 عمران خان نے مزید کہا کہ پر امن افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے، سی پیک کی وجہ سے تجارت اور ترقیاتی منصوبوں کے امکانات بڑھ رہے ہیں، طالبان نے سی پیک منصوبوں کا خیر مقدم کیا۔ انہوں نے کہا کہ سابق حکومتوں کی ناکامیوں سے افغانستان کو انسانی بحران کا سامنا ہے، افغانستان میں استحکام اور انسانی بحران کے خاتمے کے لیے اس کی مدد کرنا ہوگی۔