تازہ ترین
  • بریکنگ :- اسلام آباد:جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نظرثانی کیس کاتحریری فیصلہ
  • بریکنگ :- عدالت نے 9 ماہ 2 دن بعدنظرثانی درخواستوں کاتحریری فیصلہ جاری کیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:جسٹس یحییٰ آفریدی نےاضافی نوٹ تحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:سریناعیسیٰ کی نظرثانی درخواستیں اکثریت سےمنظور،فیصلہ
  • بریکنگ :- 10رکنی لارجربنچ کا 4-6 کےتناسب سے سریناعیسیٰ کےحق میں فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:سپریم کورٹ نے مختصر فیصلہ 26 اپریل 2021 کو سنایا تھا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:فیصلہ جسٹس مقبول باقر،جسٹس مظہرعالم نےتحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:فیصلہ جسٹس منصورعلی شاہ،جسٹس امین الدین نےتحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:عدالت کےجج سمیت کوئی قانون سےبالاترنہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:کسی کوبھی قانونی حق سےمحروم نہیں کیاجاسکتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- جج کوڈآف کنڈکٹ کےمطابق اہلخانہ کےمعاملات پرجوابدہ نہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- جج اپنی اہلیہ اوربچوں کےمعاملات کاذمہ دارنہیں ہوتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:ہرشخص کواپنےکیےاعمال کاحساب دیناہوتاہے،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:کسی اورکی غلطی پردوسرےکوسزانہیں دی جاسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ یاکوئی ادارہ سپریم جوڈیشل کونسل کوکارروائی کانہیں کہہ سکتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- صدرمملکت کی سفارش کےبغیرسپریم جوڈیشل کونسل کارروائی نہیں کرسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- بعض اوقات ججزکی ساکھ متاثرکرنےکی کوششیں ہوتی ہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ ازخودنوٹس کااختیارسپریم جوڈیشل کونسل پراستعمال نہیں کرسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ کاسپریم جوڈیشل کونسل کوحکم آرٹیکل 211 کی خلاف ورزی ہے،فیصلہ
  • بریکنگ :- ججزکےپاس اپنی صفائی پیش کرنےکیلئےعوامی فورم بھی نہیں ہوتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- ایسی صورتحال میں عدلیہ کی بطورآئینی ادارہ ساکھ متاثرہوتی ہے،فیصلہ

مقبوضہ کشمیر میں 4 کشمیریوں کی ماورائے عدالت شہادت پر پاکستان کی شدید مذمت

Published On 16 November,2021 07:38 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی افواج کی جانب سے مزید چارکشمیریوں کو ماورائے عدالت شہید کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت، کشمیریوں کی اپنی اور مقامی جدوجہد کو منظم جبرواستبداد، مظالم اور طاقت کے بہیمانہ استعمال سے دبا نہیں سکتا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ یکم اکتوبر2021 سے اب تک بھارتی قابض افواج جعلی مقابلوں اور نام نہاد ”تلاشی و چھاپوں کی کارروائیوں“ میں کم ازکم 25 کشمیریوں کو شہید کرچکی ہیں۔

ترجمان نے کہا کہ غیرقانونی طورپر بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر میں ماورائے عدالت قتل، غیرقانونی حراستیں، قید وبند کی صعوبتیں، یومیہ بنیادوں پر ہراساں کرنے اور بنیادی آزادیوں پر قدغنوں کا سلسلہ معمول بن چکا ہے۔بھارت یاد رکھے کہ کشمیریوں کی اپنی اور مقامی جدوجہد کو بھارت منظم جبرواستبداد، مظالم اور طاقت کے بہیمانہ استعمال سے دبا نہیں سکتا۔ بھارتی ریاستی دہشت گردی اور جبر کے نتیجے میں کشمیریوں کا اپنے منصفانہ نصب العین کے حصول کا عزم مزید پختہ اور توانا ہوا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے غیرقانونی طورپر بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور جنگی جرائم سے متعلق ناقابل تردید شواہد پر مشتمل ڈوزئیر عالمی برادری کے سامنے پیش کیا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ پاکستان عالمی برادری پر زور دیتا ہے کہ غیرقانونی طورپر بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق اور عالمی قانون کی خلاف ورزیوں پر بھارت کو کٹہرے میں کھڑا کرے۔

عاصم افتخار نے کہا کہ بھارتی حکومت انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں اور اقوام متحدہ کے خصوصی اختیار (مینڈیٹ)کے حامل نمائندوں کو غیرقانونی طورپر بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر جانے کی اجازت دے تاکہ وہ غیرجانبدارانہ طورپر حقائق جان سکیں جبکہ مقبوضہ خطے کے عوام کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں درج استصواب رائے کا بنیادی حق استعمال کرنے کی اجازت دے۔