تازہ ترین
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکےمزید 624 کیس رپورٹ،این آئی ایچ
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹےکےدوران کوروناسےمزید11 افراد جاں بحق
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 3.83 فیصدرہی،این آئی ایچ
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 142 مریضوں کی حالت تشویشناک،این آئی ایچ
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 16 ہزار 299 کوروناٹیسٹ کیےگئے،این آئی ایچ

ابھی تو 5 سے 10 فیصد سچ سامنے آیا، باطل مٹ کر ہی رہے گا: نواز شریف

Published On 22 April,2022 10:41 pm

لندن:(دنیا نیوز) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف نے قومی سلامتی کمیٹی اجلاس کے اعلامیہ پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ ابھی تو 5 سے 10 فیصد سچ سامنے آیا ہے، باطل مٹ کر ہی رہے گا، ریاست مدینہ کے نام پر معاشرے سے زیادتی کی گئی، عمران خان کو عبرت کا نشان بننا چاہیے۔

نیشنل سکیورٹی کمیٹی کے اعلامیے پر گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ سچ ہمیشہ سامنے آجاتا ہے، لوگوں کو بچے پالنا مشکل ہوگیا، آٹا، دالیں خریدنا مشکل ہوچکا ہے، میں نے زندگی میں پہلی دفعہ دیکھا ہے کہ لوگ دوائیں نہیں خرید سکتے، ہم نے بڑی محنت سے پاکستان کی معیشت کو بہتر کیا، عمران خان نے پاکستان کی معیشت کو زمین بوس کر دیا، الیکشن سے پہلے اور بعد میں بھی عمران خان نے جھوٹ ہی بولا، ریاست مدینہ کا نام لے کر مذہب اور معاشرے سے زیادتی کی گئی۔

سابق وزیراعظم نے مزید کہا کہ اس شخص کو عبرت کا نمونہ بننا چاہئے، نہ قانون کو مانتا ہے نہ آئین و پارلیمنٹ کو، صدر مملکت کو سوچنا چاہئے وہ ملک کے صدر ہیں عمران خان کے نہیں، مرکز اور پنجاب میں جو کچھ ہوا سب کو پتہ ہے، فارن فنڈنگ کا فیصلہ اگر انکے خلاف آیا تو اسکی پارٹی ختم ہوسکتی ہے، اس نے پہلے ہی استعفیٰ دے دیا کیونکہ اسے پتہ تھا بعد میں بھی استعفیٰ دینا پڑنا ہے۔ 

خیال رہے  کہ  وزیراعظم شہباز شریف کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی اجلاس کے اعلامیہ کے مطابق ایجنسیوں نے بریفنگ دی کہ غیر ملکی سازش سے متعلق کوئی ثبوت نہیں ملا جبکہ قومی سلامتی کمیٹی نے گذشتہ اعلامیے کی بھی توثیق کر دی۔

نواز، بلاول ملاقات کی اندرونی کہانی، ای وی ایم کے استعمال کا فیصلہ واپس لینے پر اتفاق

 لندن میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد اور سابق وزیراعظم میاں نواز شریف سے پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی جس کے مطابق ملاقات میں صدر مملکت کے مواخذے کیلئے تجاویز طلب کرلی گئیں، الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) کے استعمال کا فیصلہ واپس لینے پر اتفاق کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق نوازشریف اور بلاول بھٹو کی ملاقات کی اندرونی کہانی میں بتایا گیا ہے کہ دونوں رہنماؤں میں چارٹر آف ڈیمو کریسی ٹو کرنے پر تبادلہ خیال کیا گیا، ملاقات میں صدر مملک کے مواخذے کے حوالے سے تجاویز بھی طلب کی گئیں، سابقہ حکومت کی الیکشن ترامیم کو ختم کرنے بھی گفتگو کی گئی۔

اس حوالے سے ذرائع کا بتانا تھا کہ ای وی ایم مشینوں پر الیکشن کروانے کا فیصلہ بھی واپس لیا جائے گا، پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کا اہم اجلاس آج لندن میں ہوگا، پیپلز پارٹی سے شیری رحمٰن، نوید قمر، قمر زمان کائرہ اور مسلم لیگ ن سے اسحٰق ڈار، عابد شیر علی شریک ہوں گے۔

اجلاس میں میثاق جمہوریت اور دیگر معاملات کے حوالے سے تجاویز پر غور ہوگا، ملاقات کے بعد رپورٹ نواز شریف اور بلاول بھٹو زرداری کو پیش کی جائے گی۔