تازہ ترین
  • بریکنگ :- گورنرآرٹیکل 130 کی شق 5 کےتحت اپنےفرائض سرانجام دیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب نومنتخب وزیراعلیٰ سےحلف لیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرانتخابی عمل سےاگلےروز 11 بجےتک حلف لینےکےپابندہوں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب الیکشن کنڈکٹ سےمتعلق اپنی رائےنہیں دیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- لاہورہائیکورٹ نےتحریری فیصلہ جاری کردیا
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب یکم جولائی شام 4 بجےاجلاس بلائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- اجلاس میں دوبارہ گنتی ہوگی،لاہورہائیکورٹ کافیصلہ
  • بریکنگ :- تمام ادارےعدالتی احکامات کی پاسداری کرائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- وزیراعلیٰ کےانتخاب کاعمل مکمل کیےبغیراجلاس ملتوی نہیں ہوگا،فیصلہ

لوگ بچیں اس دن سے جب عمران خان دوبارہ پاور میں آئینگے: شہروز سبزواری

Published On 11 May,2022 07:25 pm

لاہور: (ویب ڈیسک) اداکار شہروز سبزواری نے کہا ہے کہ سابق وزیراعظم عمران خان ایک سچے انسان ہیں اور وہ انشاء اللہ پاکستان کو مدینہ کی ریاست بنائیں گے، لوگ بچیں اس دن سے جب وہ دوبارہ پاور میں آئیں گے۔

یاد رہے کہ وزارت عظمیٰ سے ہٹائے جانے کے بعد فنکار برادری کی جانب سے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی حمایت میں کئی بیانات سامنے آچکے ہیں اس دوران عمران خان کو تنقید کا نشانہ بنانے والے معروف شخصیات کو بھی عمران خان کے حمایتوں کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایا جاچکا ہے۔

سوشل میڈیا پر شہروز سبزواری کا اہلیہ صدف کنول کے ہمراہ انٹرویو کلپ وائرل ہورہا ہے جس میں انہیں سابق عمران خان کی حمایت میں بیان دیتے دیکھا جاسکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر میرے والد نے میرے پیٹ میں حلال رزق ڈالا ہے تو ایسا ہو نہیں سکتا کہ میں عمران خان کو فالو نہ کروں ، سادہ سی بات ہے جس میں کوئی دو رائے نہیں۔

اداکار نے مزید کہا کہ عمران خان ایک سچے انسان ہیں اور جس طرح ان کا کہنا ہے کہ وہ انشاء اللہ پاکستان کو مدینہ کی ریاست بنائیں گے، کوئی بھی شخص عمران خان کو فالو کیے بنا نہیں رہ سکتا، اگر آپ میں تھوڑی سی بھی غیرت ہے تو ایسا ہو نہیں سکتا کہ کوئی بھی انسان عمران خان کو فولو نہ کرے۔

شہروز سبزواری نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی چیئر مین چونکہ پہلی بار سیاست میں آئے تھے لہٰذا سیاست تو انہوں نے اب سیکھی ہے، لوگ بچیں اس دن سے جب عمران خان دوبارہ پاور میں آئیں گے، اب تو معروف شخصیات بھی تسلیم کرچکی ہیں کہ عمران خان اپوزیشن کیلئے زیادہ خطرناک ہوچکے ہیں کیوں کہ انہوں نے اب سیاست سیکھی ہے۔