تازہ ترین
  • بریکنگ :- پولیس نےلاہوربھرسے 63 سےزائد کارکنوں کوحراست میں لےلیا
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کامیاں اسلم اقبال کےگھرپرچھاپہ
  • بریکنگ :- پولیس نےمیاں اسلم اقبال کےبھائی میاں افضل اقبال کوگرفتارکرلیا
  • بریکنگ :- پولیس کااعجازچودھری،میاں اکرم عثمان،عقیل صدیقی کےگھرپربھی چھاپہ
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کاجوہرٹاؤن میں رہنماپی ٹی آئی سعدیہ سہیل راناکےگھرپرچھاپہ
  • بریکنگ :- لاہور:چھاپےکےوقت سعدیہ سہیل رانا گھرپرموجود نہیں تھیں
  • بریکنگ :- لاہور:تحریک انصاف کےمرکزی دفترکےباہرپولیس نفری موجود
  • بریکنگ :- پولیس کاتحریک انصاف لاہورکےنائب صدرملک وقارکےڈیرےپرچھاپہ
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کاگارڈن ٹاؤن میں رہنماپی ٹی آئی فرخ جاویدمون کےگھرپرچھاپہ
  • بریکنگ :- لاہور:محمدبشارت راجہ کی رہائشگاہ دھمیال ہاؤس پرپولیس کاچھاپہ
  • بریکنگ :- لاہور:ملازمین سےپوچھ گچھ،راجہ بشارت گھرپرموجود نہیں تھے
  • بریکنگ :- لاہور:حماداظہرکی رہائشگاہ کےباہرسےمتعددکارکن زیرحراست
  • بریکنگ :- لاہور:رہنماپی ٹی آئی سمیع اللہ چودھری کےگھرپولیس کاچھاپہ،بھائی گرفتار
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کےسیداویس بخاری اورغلام مصطفیٰ کےگھروں پرچھاپے
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کاطارق محمودالحسن کےگھرپرچھاپہ،گرفتاری عمل میں نہیں آئی
  • بریکنگ :- لاہور:پی ٹی آئی کےبانی کارکن ملک اشتیاق کےگھرپولیس کاچھاپہ
  • بریکنگ :- نامعلوم مقام پرہونےکی وجہ پولیس ملک اشتیاق کوگرفتارنہ کرسکی
  • بریکنگ :- لاہور:شیراکوٹ میں پی ٹی آئی رہنماسعیداحمدخان کےگھرپرپولیس کاچھاپہ
  • بریکنگ :- لاہور:سعیداحمدخان گھرپرموجودنہیں تھے،خاندانی ذرائع
  • بریکنگ :- پی ٹی آئی ایم پی اےچودھری اخلاق کےگھرپرپولیس کاچھاپہ
  • بریکنگ :- چودھری اخلاق کےگھرسےکوئی گرفتاری عمل میں نہیں آسکی
  • بریکنگ :- شمالی لاہورمیں تحریک انصاف کےکارکنوں کےگھروں پرچھاپے
  • بریکنگ :- لاہور:سابق چیئرمین یوسی 25 بلال بٹ کابھائی گرفتار
  • بریکنگ :- لاہور:ملک اویس ظہورکے2بھائیوں کوگرفتارکرلیاگیا
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کاگلبرگ میں سینیٹرولیداقبال کی رہائشگاہ پرچھاپہ
  • بریکنگ :- سینیٹرولیداقبال اسلام آبادمیں ہونےکی وجہ سےگرفتارنہ ہوسکے
  • بریکنگ :- لاہور:پی ٹی آئی عہدیداروں اورکارکنوں کےخلاف کریک ڈاؤن
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کااسلام پورہ میں رہنماپی ٹی آئی علی نویدکےگھرپرچھاپہ
  • بریکنگ :- لاہور:چودھری عامر،ماسٹرفیاض،راناعامرکےگھروں پربھی چھاپے
  • بریکنگ :- لاہور:ملک اویس ظہورممبرکنٹونمنٹ بورڈوراڈنمبرایک کےگھرچھاپہ
  • بریکنگ :- پولیس نےرات 2بجےبغیروارنٹ میرےگھرچھاپہ مارا،گیٹ توڑدیا،ناصرہ جاویداقبال
  • بریکنگ :- پولیس والےسینیٹرولیداقبال کوڈھونڈرہےتھے،ناصرہ جاویداقبال
  • بریکنگ :- کبھی قانون نہیں توڑا،ایساکسی تہذیب والےمعاشرےمیں نہیں ہوتا،ناصرہ جاویداقبال
  • بریکنگ :- مسرت جمشیدچیمہ کےگھرپولیس کاایک اورچھاپہ
  • بریکنگ :- پولیس نےگارڈرمضان ودیگرملازمین کوگرفتارکرلیا،مسرت جمشیدچیمہ
  • بریکنگ :- لاہور:پولیس کاپی ٹی آئی رہنمامحمودالرشیدکےگھرپرچھاپہ،گرفتاری عمل میں نہ آسکی
  • بریکنگ :- لاہور:غازی آبادمین بازارنمبر 2کےصدرسمیت متعددافرادگرفتار

’جعلی خبریں’ نشر کرنے پر چین کی بی بی سی پر کڑی تنقید

Published On 29 July,2021 09:25 pm

بیجنگ: (ویب ڈیسک) دنیا بھر میں نشاطِ ثانیہ کی طرف گامزن ہونے والے ملک چین نے بی بی سی کی جانب سے ملک میں آنے والے سیلاب سے متعلق 'جعلی خبریں' نشر کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وسطی چین میں تباہ کن سیلابوں کی کوریج پر ادارہ انتہائی غیرمقبول ہوا ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق چینی وزارت خارجہ کی طرف سے یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب برطانوی خبر رساں ادارے بی بی سی نے رپورٹ کیا تھا کہ قوم پرستوں کے ذریعے صحافیوں کو ہراساں کرنے کا سلسلہ ترک کیا جانا چاہیے جہاں قوم پرست عناصر غیر ملکی میڈیا، ذرائع ابلاغ پر متعصبانہ رپورٹنگ کا الزام عائد کرتے رہے ہیں۔

اے ایف پی کے مطابق چین کے وسطی صوبہ ہینن میں شدید بارشوں کے نتیجے میں آنے والے سیلاب سے کم از کم 99 افراد افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق سیلاب کی کوریج کے دوران انکے صحافیوں کو آن لائن ہراساں کیا گیا جبکہ دیگر اداروں کے صحافیوں نے حملوں کی شکایت کی ہے جس سے چین میں غیرملکی صحافیوں کو خطرات لاحق ہو گئے ہیں۔

ترجمان چینی وزارت خارجہ ژاؤ لیجیان نے بی بی سی کو  جعلی نیوز براڈکاسٹنگ کمپنی  قررا دیتے ہوئے کہا کہ بی بی سی نے صحافتی معیار میں ابتری کا مظاہرہ کرتے ہوئے چین پر حملے کی کوشش کی۔ بی بی سی اسی رویے کا مستحق ہے کہ وہ چینی عوام میں غیر مقبول ہو اور بلاوجہ نفرت کی بات نہیں ہے۔

منگل کے روز 16 لاکھ فالوورز کی حامل چین کی حکمران کمیونسٹ پارٹی کی یوتھ برانچ نے بی بی سی کے رپورٹرز کی نقل و حرکت پر نظر رکھنے کے لیے آن لائن تبصرے شائع کیے جس کے بعد لفظوں کی جنگ شروع ہو گئی ہے۔ ہینن کمیونسٹ یوتھ لیگ کے قوم پرستوں کی جانب سے کیے گئے تبصروں میں بی بی سی نمائندوں کو موت کی دھمکیاں دی گئیں۔

اے ایف پی کے مطابق گزشتہ ہفتے چینی شہر ژینگ ژو میں تین دن میں سال کی سب سے زیادہ بارش ریکارڈ کی گئی تھی اور کم از کم 14 افراد ہلاک اور شہر کے سب وے کے نظام میں سیلابی پانی بھرنے سے 500 سے زائد مسافر پھنس گئے تھے۔

سٹی اور صوبائی عہدیداروں کو احتساب کے مطالبات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ متاثرین میں سے ایک کی اہلیہ نے بتایا کہ سب وے میٹرو انتظامیہ پر غفلت برتنے کا مقدمہ کریں گی۔ لیکن شفافیت کے مطالبے کے باوجود غیرملکی صحافیوں کو چین میں بڑھتے ہوئے متصبانہ رویے کا سامنا ہے کیونکہ چین کی منفی منظر کشی کے حوالے سے حساسیت اب عروج پر پہنچ چکی ہے۔

چین وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ غیر ملکی نمائندے چین میں آزادانہ رپورٹنگ کے ماحول سے لطف اندوز ہوتے ہیں۔

البتہ ان کے اس بیان کے برعکس آزاد میڈیا کے لیے آواز اٹھانے والے گروپوں کا کہنا تھا کہ غیرملکی رپورٹرز کے لیے کام کرنا مشکل ہوتا جا رہا ہے جہاں صحافیوں کا گلیوں چوراہوں میں پیچھا کیا جاتا ہے، آن لائن ہراساں کیا جاتا ہے اور ویزا دینے سے انکار کیا جاتا ہے۔