تازہ ترین
  • بریکنگ :- مشیرقومی سلامتی معیدیوسف کابین الوزارتی وفدکےہمراہ کابل کادورہ
  • بریکنگ :- معیدیوسف کی نائب عبوری وزیراعظم ملاعبدالسلام حنفی سےملاقات
  • بریکنگ :- افغانستان کی موجودہ صورتحال سمیت اہم امورپرتبادلہ خیال
  • بریکنگ :- تجارتی فروغ اوربرادرانہ تعلقات کومزیدمضبوط بنانےسےمتعلق گفتگو
  • بریکنگ :- معید یوسف کی افغان عبوری وزیرخارجہ سے بھی ملاقات
  • بریکنگ :- اقتصادی تعاون اورانسانی امدادسےمتعلق امورپربات چیت
  • بریکنگ :- افغان سرزمین کسی کیخلاف استعمال کی اجازت نہیں دیں گے،عبدالسلام حنفی
  • بریکنگ :- پاکستان افغان عوام کےساتھ کھڑا ہے،حمایت جاری رکھیں گے،معید یوسف
  • بریکنگ :- معاشی تعلقات کے بغیرامن واستحکام ممکن نہیں، مشیرقومی سلامتی

تنخواہ میں کمی کے انسانی صحت پر منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں: تحقیق

Published On 24 October,2020 05:21 pm

لندن: (ویب ڈیسک) ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ مالی وسائل کی کمی اور خاص طور پر تنخواہ میں کمی کے انسانی صحت پر منفی اثرات مرتب ہو سکتے ہیں۔

کورونا وائرس کے بحران کے بعد دنیا کی بہت سی کمپنیوں نے اپنے ملازمین کی تنخواہیں کم کردی ہیں جس کے باعث معاشرے میں ڈپریشن کا خدشہ زیادہ ہو گیا تھا۔

تحقیق کے مطابق تنخواہ کم ہونے سے انسان ذہنی مسائل کا شکار ہونے کے باعث دل کے مختلف امراض میں مبتلا ہوسکتا ہے۔ دوسرے لوگوں کی نسبت ایسے شخص کا مختلف قسم کی بیماریوں کے لاحق ہونے کا خطرہ 20 فیصد زیادہ ہو جاتا ہے۔

اس کے برعکس تنخواہ میں اضافے سے آدمی دل کے مختلف امراض سے بچ سکتا ہے۔ دوسرے لوگوں کی نسبت وہ دماغی حملوں سے 14 فیصد زیادہ محفوظ رہتا ہے۔

تنخواہ کی کمی اور دل کے امراض کے لاحق ہونے کے اسباب کا جائزہ لیا گیا تومعلوم ہوا کہ تنخواہ کم ہونے پر آدمی غیر صحت بخش غذا استعمال کرنے پر مجبور ہوتا ہے۔

تنخواہ میں کمی کے باعث انسان ٹینشن کا شکار ہوتا ہے، سگریٹ زیادہ پینے لگتا ہے جبکہ افسردگی طاری رہتی ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ دل کے امراض کا شکار ہوجاتا ہے۔