تازہ ترین
  • بریکنگ :- سنگل ونڈوکےورچوئل سسٹم اورمتعلقہ وزارتوں سےلنک پربریفنگ
  • بریکنگ :- نظام عالمی تجارتی انتظامی امورکیلئےوزارتوں اورمحکموں کوجوڑےگا،اعلامیہ
  • بریکنگ :- تجارت اورٹرانسپورٹ سےمنسلک فریقین کومعلومات میسرآسکیں گی،اعلامیہ
  • بریکنگ :- نظام سےغیرضروری اخراجات کم ہوسکیں گے،اعلامیہ
  • بریکنگ :- سنگل ونڈوکادوسرااورتیسرافیز 2سال میں مکمل ہوگا،اعلامیہ
  • بریکنگ :- پاکستان خطےمیں تجارت اورٹرانزٹ کامرکزبن سکےگا،وزیرخزانہ
  • بریکنگ :- وزیرخزانہ کی زیرصدارت پاکستان سنگل ونڈوکونسل کی گورننگ کونسل کااجلاس
  • بریکنگ :- نظام سےکاروبارکرنےمیں وقت کی بچت اورآسانیاں پیداہوں گی،وزیرخزانہ

کورونا حملے کے بعد علامات ظاہر ہونے میں 6 دن کا وقت لگ سکتا ہے: آئرش تحقیق

Published On 06 November,2020 05:32 pm

لندن: (ویب ڈیسک) آئر لینڈ میں ہونیوالی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ کورونا وائرس کے حملہ کے بعد علامات کے ظاہر ہونے میں چھ دن تک وقت لگ سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ماہرین صحت اس وقت کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے اسباب کے متعلق تحقیق کر رہے ہیں۔ جس میں ایک شخص سے دوسرے کو منتقل ہونے کی کیفیت اور پھیلاؤ کو جانچنے کی وجوہات پر تحقیق جاری ہے اور اس تحقیق کے بعد کورونا پر موثر انداز میں قابو پانا ممکن ہوگا۔

برطانیہ میں ڈیلی میل اخبار نے آئرلینڈ میں ہونے والی ریسرچ شائع کی ہے جس کے مطابق کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے 50 فیصد لوگوں کو ایسے اشخاص سے کورونا ہوا تھا جن میں ظاہری علامات کوئی نہیں تھیں۔

اس ریسرچ میں 17 کیسوں کو بطور ثبوت پیش کیا گیا ہے جنہیں کورونا وائرس ایسے اشخاص سے ہوا جن میں بظاہر کوئی علامات نہیں پائی جاتی تھیں۔

تحقیق کے مطابق کورونا سے متاثر ہونے والے 80.33 فیصد مریض ایسے تھے جنہیں ایسے لوگوں سے کورونا ہوا تھا جو خود نہیں جانتے تھے کہ وہ اس وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں، ان پر بظاہر کوئی علامات بھی نہیں تھیں جیسے مسلسل کھانسی، بخار اور سانس لینے میں مشکلات وغیرہ۔

ریسرچ میں واضح کیا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے حملہ کے بعد علامات کے ظاہر ہونے میں چھ دن تک وقت لگ سکتا ہے۔ان دنوں میں سب سے خطرناک دن کورونا سے متاثر ہونے کا پہلا یا تیسرا دن ہوتا ہے جو علامات ظاہر ہونے سے پہلے چھ دن ہوتے ہیں۔

اس تحقیق کی اہمیت ان کےلیے بڑی واضح ہے جو ایسے شخص کےساتھ رہیں ہوں جس میں کورونا کی تشخیص ہو جائے انہیں ضروری احتیاط کی اشد ضرورت ہوگی۔