تازہ ترین
  • بریکنگ :- پارلیمنٹ کوکمزورکرناجمہوریت کوکمزورکرنےکےمترادف ہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- پیپلزپارٹی نےہمیشہ جمہوریت کیخلاف اقدامات کیے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- جوپیسہ سندھ کےحوالےکرتےہیں وہ دبئی سےبرآمدہوتاہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- اپوزیشن انتخابی اصلاحات کیلئےپارلیمنٹ میں آکرتجاویزدے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- چاہتےہیں کہ پارلیمان کومضبوط بنادیں،وزیراطلاعات فوادچودھری
  • بریکنگ :- فضل الرحمان جیسےلوگ چاہتےہیں کہ سسٹم نہ چلے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف کبھی مولانا،کبھی بلاول کاکندھااستعمال کررہےہیں،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف کےپاس(ن)لیگ کاکنٹرول نہیں ہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف اپنےفیصلےکرنےمیں آزادنظرنہیں آتے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- سندھ کےسب سےبڑےدشمن سندھ پرراج کررہےہیں،فوادچودھری
  • بریکنگ :- یہ ضروری ہےکہ جوپیسہ سندھ کودیں اس کی مانیٹرنگ کی جائے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- زرداری،فریال تالپور،مرادعلی شاہ کی زمینوں کاپانی چوری کیوں نہیں ہوتا؟فوادچودھری
  • بریکنگ :- کراچی:سندھ میں اگلی حکومت پی ٹی آئی کی ہوگی،فوادچودھری
  • بریکنگ :- ان کےدن بھی تھوڑےہیں،آخری الیکشن تھاجوانہوں نےلڑلیا،فوادچودھری
  • بریکنگ :- اپوزیشن کےپاس کوئی ایجنڈانہیں،وزیراطلاعات فوادچوھری
  • بریکنگ :- ارسانےعملی اقدام شروع کیےتومرادعلی شاہ جوتےچھوڑکربھاگ گئے،فواد چودھری
  • بریکنگ :- پانی خودچوری کررہےہیں،الزام وفاق،پنجاب پرلگایاجارہاہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- وفاق اورپنجاب میں(ن)لیگ نے 30 سال حکومت کی،فوادچودھری

پاک بھارت انڈس کمیشن کا اگلا اجلاس جلد پاکستان میں منعقد کرنے پر اتفاق

Published On 25 March,2021 08:34 pm

اسلام آباد: (اے پی پی) پاکستان اور بھارت نے آبی معاملات کو حل کرنے کے لئے کوششیں کرنے، معائنہ کے لئے دورے اور پاک بھارت مستقل انڈس کمیشن کا اگلا اجلاس جلد پاکستان میں منعقد کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق پاک بھارت مستقل انڈس کمیشن (پی آئی سی) کا 116 واں اجلاس 23-24 مارچ کو نئی دہلی میں منعقد ہوا۔

سندھ طاس معاہدہ (آئی ڈبلیو ٹی) کی متعلقہ دفعات کے تحت یہ اجلاس سالانہ باری باری پاکستان اور بھارت میں منعقد ہوتا ہے۔ پاکستا ن کی قیادت کمشنر برائے انڈس واٹرز سید محمد مہر علی شاہ کر رہے تھے۔

اجلاس کے دوران سندھ طاس معاہدہ سے متعلق مختلف معاملات زیر بحث لائے گئے۔ پاکستان نے پکل دل ، لوئر کلنائی ، دربوک شیوک اور نمو چلنگ سمیت بھارتی منصوبوں پر اپنے اعتراضات کا اعادہ کیا۔

پاکستان نے بھارت پر زور دیا کہ وہ سندھ طاس معاہدہ کی دفعات کے تحت سیلاب کے بہاؤ کے اعدادوشمار شیئر کرے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق پاکستان نے سندھ طاس معاہدہ کی دفعات کے تحت تمام اہم۔معاملات کے جلد حل کی اہمیت پر زور دیا۔