تازہ ترین
  • بریکنگ :- پاک آرمی کی چولستان کےدورافتادہ علاقوں میں مفت طبی سہولتیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- منصوبےکوعملی جامہ پہنانے کیلئے پاک آرمی کی خصوصی ٹیمیں تشکیل،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- ضلعی انتظامیہ کےساتھ طبی سہولتوں کی فراہمی کیلئےسرگرم ہیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- 2021 میں چنن پیر،کھتری بنگلہ،دین گڑھ میں میڈیکل اورآئی کیمپ کاانعقادکیاگیا
  • بریکنگ :- چاہ ناگراں،چاہ ملکانہ میں میڈیکل اورآئی کیمپ کا انعقادکیاجاچکاہے،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کالاپہاڑ،احمدپورایسٹ، منچن آباد اور چشتیاں میں فری میڈیکل اورآئی کیمپ کا انعقادکیاگیا
  • بریکنگ :- 12 ہزارافراد کوفری طبی سہولیات مہیا کی جا چکی ہیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- تحصیل اسپتال فورٹ عباس میں فری میڈیکل کیمپ 12سے 17 اکتوبرتک جاری ہے
  • بریکنگ :- 15 اکتوبر 2021کوکورکمانڈر بہاولپورنےآئی کیمپ کا دورہ کیا،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کورکمانڈربہاولپورنےکیمپوں میں دی گئی سہولتوں کاجائزہ لیا،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کورکمانڈرنےہدایت کی کہ زیادہ ترمریضوں کوطبی سہولتیں دی جائیں،آئی ایس پی آر

سندھ میں کورونا کے باعث نافذ پابندیاں دو ہفتے تک برقرار رکھنے کا فیصلہ

Published On 22 May,2021 02:27 pm

کراچی: (دنیا نیوز) وزیراعلی سندھ نے صوبے میں کورونا کے بڑھتے کیسز کے پش نظر موجودہ پابندیوں کو دو ہفتے برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ کاروباری اوقات کار رات 8 بجے سے تبدیل کر کے 6 بجے کر دیئے گئے۔

وزیراعلیٰ سندھ کی صدارت میں کورونا وائرس صوبائی ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا جس میں صوبائی وزراء، آئی جی سندھ، فوج اور رینجرز کے نمائندوں سمیت دیگر نے بھی شرکت کی۔ پیر سے دکانیں 8 کے بجائے شام 6 بجے تک کھلیں گی۔ ڈپارٹمنٹل سٹورز بھی 6 بجے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تمام سیاحتی مراکز، سی ویو، ہاکس بے، تفریحی پارکس، شادی ہالز 2 ہفتے تک بند رہیں گے۔ انٹر سٹی ٹرانسپورٹ 50 فیصد مسافروں کے ساتھ چلیں گی۔ سکول کھلنے کا فیصلہ کورونا صورتحال سے مشروط کر دیا گیا، کیسز کا جائزہ لیکر فیصلہ کیا جائے گا۔ وزیر تعلیم کو تعلیمی اداروں میں اساتذہ کی ویکسینیشن کرنے کا بندوبست کرنے کی ہدایت دی گئی۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ صوبے میں تشخیص کی شرح 8.8 فیصد جبکہ کراچی میں تقریبا 14 فیصد ہے۔ حیدرآباد میں شرح 10.83 فیصد اور باقی اضلاع میں 5.40 فیصد کیسز رپورٹ ہوئے۔ صوبے میں ایک ماہ میں 213 مریضوں کا انتقال ہوا، جن میں 164 مریض ہسپتالوں میں وینٹیلیٹر پر تھے، 26 مریض گھروں میں انتقال کرگئے۔