تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزیراعظم کاچین کےروزنامہ گلوبل ٹائمزمیں چھپنےوالاآرٹیکل
  • بریکنگ :- چین کیساتھ ہمارےتعلقات مثالی ہیں،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- چین کیساتھ تعلقات پاکستان کی خارجہ پالیسی کابنیادی جزوہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- چین کیساتھ دوستانہ تعلقات کوتمام سیاسی جماعتوں کی حمایت حاصل ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- دونوں ممالک کےتعلقات کی تاریخ منفرد،باہمی اعتماداورتعاون پرقائم ہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- چین پاکستان کاسب سےبڑاتجارتی شراکت دارہے،عمران خان
  • بریکنگ :- گزشتہ سال دونوں ممالک کےدرمیان تجارتی حجم ریکارڈسطح پررہا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغانستان گزشتہ 20 سال سےعدم استحکام کاشکاررہا،عمران خان
  • بریکنگ :- پاکستان پائیدارترقی کےراستےپرگامزن ہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پاکستان کی قومی سلامتی پالیسی عوام کی خوشحالی کےگردگھومتی ہے،وزیراعظم

آرمی چیف سےچینی سفیراورقطری نمائندہ خصوصی کی ملاقاتیں،اہم امورپرگفتگو

Published On 09 July,2021 10:19 pm

راولپنڈی: (دنیا نیوز) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے چینی سفیر نونگ رونگ اور قطر کے خصوصی نمائندے نے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں جن میں باہمی دلچسپی کے امور، علاقائی سیکیورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق دونوں رہنماؤں کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون اور پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) پر پیشرفت پر بھی گفتگو ہوئی۔

آرمی چیف نے کورونا کے دوران تعاون پر چین کا شکریہ ادا کیا۔ چینی سفیر نونگ رونگ نے خطے میں امن کیلئے پاکستان کے مثبت کردار کو سراہا۔ انہوں نے باہمی سفارتی تعلقات مزید مضبوط بنانے کے عزم کا اعادہ بھی کیا۔

دوسری جانب قطر کے انسداد دہشتگردی اور تنازعات کے حل سے متعلق نمائندہ خصوصی نے جی ایچ کیو میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق علاقائی سیکیورٹی اور افغانستان کی صورتحال پر بھی بات چیت کی گئی۔ ملاقات میں افغانستان میں مفاہمتی اور سہولت کاری سے متعلق عمل پر بھی غور جبکہ مختلف شعبوں میں تعاون کے فروغ پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

آرمی چیف نے قطر کے افغان امن عمل میں تعمیری کردار کو سراہا اورکہا کہ امید ہے قطر خطے میں امن واستحکام کیلئے تعاون جاری رکھے گا۔

قطری نمائندے نے خطے میں امن واستحکام کیلئے پاکستان کی کوششوں کو سراہا اور دو طرفہ تعلقات کو فروغ دینے کےعزم کا اعادہ کیا۔