تازہ ترین
  • بریکنگ :- اسلام آباد:حکومت کوبہت سےمعاشی چیلنجزکاسامنارہا،وزیرخزانہ
  • بریکنگ :- کوروناکی وجہ سےبہت سی مشکلات کاسامناکرناپڑا،شوکت ترین
  • بریکنگ :- کوروناکی وجہ سےدنیابھرمیں اشیاکی قیمتوں میں اضافہ ہوا،وزیرخزانہ

ہمیں بیانیوں کے تضاد کا شکار نہیں ہونا چاہیے اور نہ توجہ دینی چاہیے: مریم نواز

Published On 21 September,2021 05:44 pm

لاہور: (دنیا نیوز) پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ ہمیں بیانیوں کے تضاد کا شکار نہیں ہونا چاہیے اور نہ ہی اس پر توجہ دینی چاہیے۔ اگلا الیکشن ہمارا ہے، اس لیے ہمیں مضبوطی اور اتحاد سے الیکشن لڑنا ہو گا، اگر ہمارا بیانیہ ہمارے پاس نہ ہوتا تو ہم میں اور دوسری جماعتوں میں کوئی فرق نہ ہوتا۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن پنجاب کے زیر اہتمام ملتان ڈویژن کی میٹنگ ہوئی، قائد مسلم لیگ ن، مریم نواز، حمزہ، رانا ثنا اللہ، اویس لغاری، عظمی بخاری، ذیشان رفیق، عبد الرحمن کانجو،نزہت صادق سمیت ایم این ایز،ایم پی ایز اور پارٹی عہدیدار نے شرکت کی۔

پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب کا کہنا تھا کہ جب ہر طرف ہر لیڈر کو جبر اور ظلم کا سامنا ہے اسکے باوجود کنٹورنمنٹ بورڈ میں شاندارکامیابی ملی۔ مسلم لیگ ن کتنی بڑی طاقت ہے اس کا اندازہ اس کے دشمنوں اور حکومت کو بخوبی ہے لیکن خود ن لیگ کو نہیں ہے۔ اس لیے آج بھی ان کو ہمیں ہرانے کےلئے دھاندلی اور ووٹ چوری کرنا پڑتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کا مستقبل کوئی ہے تو وہ مسلم لیگ ن ہے، کسی جماعت کے پاس ہمارے جیسا لیڈر ہے نہ ہمارے جیسا ووٹ بینک ہے، باقی جماعتوں کے سربراہ کارکنوں سے قربانی مانگتے ہیں ، ہمارے لیڈر نے خود قربانی دی ہے۔

لیگی نائب صدر کا کہنا تھا کہ ہمیں بیانیوں کے تضاد نہ شکار ہونا چاہیے اور نہ اس پر توجہ دینی چاہیے، لوگ کہہ رہے ہیں یہ دھاندلی کر کے دوبارہ آنا چاہتے ہیں لیکن میں ان کو بتا دوں اب دوبارہ ووٹ چوری کرنا ممکن نہیں ہوگا۔

مریم نواز کا مزید کہنا تھا کہ پورے ملک میں ووٹ کو عزت کا بیانیہ چل رہا ہے، آج ہر ادارہ اپنی بقاء کی جنگ لڑ رہا ہے، آج کرم ایجنسی کی رپورٹ پی ٹی آئی کی حکومت کے منہ پر طمانچہ ہے، ان کے پول کھل رہے ہیں اس لیے الیکشن کمیشن پر حملہ آور ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر ہم نے تھوڑی سے کمزوری دکھائی تو یہ ہم پر چڑھ دوڑیں گے، اس لیے ہمیں مضبوط ہونا پڑے گا، اگلا الیکشن ہمارا ہے، اس لیے ہمیں مضبوطی اور اتحاد سے الیکشن لڑنا ہوگا، اگر ہمارا بیانیہ ہمارے پاس نہ ہوتا تو ہم میں اور دوسری جماعتوں میں کوئی فرق نہ ہوتا، ہمارا بیانیہ ہی ہماری پہچان ہے۔