تازہ ترین
  • بریکنگ :- ہم نے آئی ایم ایف پروگرام کوبحال کیا ،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- عالمی مارکیٹ میں پٹرول کی قیمت بڑھ رہی ہے،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- پٹرول کی نئی قیمت 248روپے 74پیسے ہوگی،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- نئی قیمتوں کا اطلاق رات 12بجے ہوگا،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- بجٹ میں امیرطبقے پرٹیکس لگایا ہے،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- عمران خان نےآئی ایم ایف معاہدہ توڑکر 233ارب کانقصان کیا،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- عمران خان حکومت نے لیوی 4روپےمرحلہ واربڑھانےکااعلان کیاتھا،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- عمران خان معاہدے کے مطابق پٹرول ،ڈیزل پر 70روپےٹیکس ہوناچاہیے تھا،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- حکومت ڈیزل پر 5 ،پٹرول پر 10روپے ٹیکس لے رہی ہے،مفتاح اسماعیل
  • بریکنگ :- عمران خان نے آئی ایم ایف معاہدے کی خلاف ورزی کی،مفتاح اسماعیل

ناجائز منافع خوری میں ملوث عناصر کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے: وزیراعظم

Published On 29 November,2021 07:26 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وزیر اعظم عمران خان نے ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ذخیرہ اندوزی اور ناجائز منافع خوری میں ملوث عناصر کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں کھاد کے موجودہ سٹاک اور قیمتوں کے حوالےسے جائزہ اجلاس ہوا، اجلاس میں وفاقی وزراء اسد عمر، مخدوم خسرو بختیار، سیّد فخر امام، مشیر خزانہ شوکت ترین اور سینئر افسران نے شرکت کی۔ ۔

اجلاس کے دوران وزیراعظم کو بریفنگ دی گئی کہ کھاد کی فی بوری قیمت فروخت میں اوسطاً 400 روپے کی کمی آئی ہے، کھاد کی سپلائی کو مانیٹر کرنے کے لیے آن لائن پورٹل بنا لی گئی ہے، آن لائن پورٹل سے صوبے اور تمام ضلعی انتظامیہ کھاد کی نقل و حرکت اور اسٹاک کو مانیٹر کر سکتے ہیں۔

چیف سیکرٹری پنجاب نے کہا کہ 13 نومبر سے اب تک کھاد کی ذخیرہ اندوزی کو روکنے کے لیے متعدد اقدامات لئے گئے ہیں، پنجاب 347 ایف آئی آر، 244 گرفتاریاں، 21٫111 انسپیکشنز، 480 گودام سیل اور 2.79 کروڑ کے جرمانے لگائے جا چکے۔

بریفنگ کے دوران مزید بتایا گیا کہ ہر ضلع میں کنٹرول روم بنائے گئے ہیں جہاں کھاد کی کمی، ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری سے متعلق شکایات درج کروائی جا سکتی ہیں، صوبوں کے مابین سرحدوں پر اسمگلنگ روکنے کے لیے چیک پوسٹیں قائم کر دی گئیں۔

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ذخیرہ اندوزی اور ناجائز منافع خوری میں ملوث عناصر کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔